یمنی فورسز سے جھڑپوں میں 22حوثی ہلاک،تین مقامات سے بھی پسپا

حوثی لیڈر قوم کو گمراہ کررہے ہیں،یمنی فورسز کے ہاتھ لگنے والے گرفتار جنگجو کا اعتراف

پیر اپریل 12:24

صنعائ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 اپریل2018ء) یمن کی مغربی گورنری الجوف میں برط العنان ڈائریکٹوریٹ میں سرکاری فوج نے اہم پیش قدمی کرتے ہوئے متعدد مقامات باغیوں سے واپس لے لیے۔جبکہ جھڑپوں میں کم ازکم 22جنگجوئوں کو ہلاک کر دیا گیا ادھریمن میں سرکاری فوج کے ہاتھوں گرفتارہونے والے ایک حوثی شدت پسند نے اپنی لیڈرشپ کے جعلی دعوؤں اور دروغ گوئی کا پول کھول دیا۔

عرب ٹی وی کے مطابق یمنی فوج کے میڈیا سینٹر کی طرف سے ایک فوٹیج جاری کی گئی ہے جس میں حوثی جنگجو کو اعترافات کرتے سنا جاسکتا ہے۔ اتوار کے روز جاری کی گئی فوٹیج میں بتایا گیا ہے کہ جنگجو کو وسطی یمن کے البیضاء شہر میں قانیہ کے محاذ سے گرفتار کیا گیا۔گرفتار جنگجو نے بتایا کہ حوثی قیادت لوگوں کو جنگ میں جھونکنے اور انہیں دھوکہ دینے کے لیے کذب بیانی کا مظاہرہ کرتے ہوئے عوام کو گمراہ کر رہی ہے۔

(جاری ہے)

ادھر مغربی گورنری الجوف میں برط العنان ڈائریکٹوریٹ میں سرکاری فوج نے اہم پیش قدمی کرتے ہوئے متعدد مقامات باغیوں سے واپس لے لیے۔الجوف میں آپریشن کے انجچار کرنل عبداللہ مطوان نے بتایاکہ یمنی فوج نے عرب اتحادی فوج کی معاونت سے برط العنان ڈائریکٹوریٹ کے پہاڑی سلسلے اور وادی القعیف میں تبہ ثوابنہ کا کنٹرول سنبھال لیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ برط العنان میں حوثی باغی تین اطراف سے گھیرے میں آگئے اورجھڑپوں میں کم ازکم 22جنگجوئوں کو ہلاک کر دیا گیا ۔

متعلقہ عنوان :