بی این پی ایک جمہوری سوچ رکھنے والی جماعت ہے ، میر اسرار اللہ خان زہری

جمہوری لوگ ہیں، سمجھتے ہیں بلوچستان کے تمام مسائل کا حل بھی جمہوری سوچ سے ہی ممکن ہے، سابق وفاقی وزیر

منگل اپریل 21:53

خضدار(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 اپریل2018ء) بی این پی (عوامی ) کے سربراہ و سابق وفاقی وزیر میر اسرار اللہ خان زہری نے کہا ہے کہ بی این پی ایک جمہوری سوچ رکھنے والی جماعت ہے ہم جمہوری لوگ ہے اور ہم سمجھتے ہیں کہ بلوچستان کے تمام مسائل کا حل بھی جمہوری سوچ سے ہی ممکن ہے انتخابی اتحاد کے لئے ہمارے دروازے سب کے لئے کھلے ہے مگر میدان ہم کسی کے لئے خالی نہیں چھوڑئینگے چار سال تک عوام کو نظر انداز کرنے والے آج سلائی مشین ،ٹرانسفارمرز تقسیم کر کے لوگوں کے ووٹ خریدنا چاہتے ہیں مگر اب انہیں کامیابی حاصل نہیں ہو گی نیب اربوں روپے کرپشن کرنے والے کے خلاف کاروائی کریںان خیالات کا اظہار انہوں نے مقامی صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا بی این پی (عوامی ) کے سربراہ کا کہنا تھا کہ ہم شروع دن سے یہ کہتے چلے آ رہے ہیں کہ ہم جمہوری لوگ ہیں جمہوریت پر یقین رکھتے ہیں اور جمہوریت کے زریعے تمام مسائل کے حل کی حمایت و جد و جہد کرتے آ رہے ہیں ہم سمجھتے ہیں کہ بلوچستا ن کے مسائل کا حل بھی جمہوریت سے مضمر ہے ایک سوال کے جوا ب میں ان کا کہنا تھا کہ آنے والے انتخابات کے حوالے سے اتحاد کے لئے ہماری دروازے سب کے لئے کھلے ہیں مگر یہ بات طے ہیں کہ بی این پی (عوامی ) سیاسی میدان کسی کے لئے خالی نہیں چھوڑے گی کارکنان انتخابات کی بھر پور تیاری کریں ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ اربوں روپے نوش جان کر کے اب انتخابات کے قریب آتے ہی مختلف علاقوں میں سلائی مشینیں ،ٹرانسفارمرز تقسیم کرنے کے ساتھ ساتھ نالیاں بھی پختہ کر رہے ہیں چار سال تک سلائی مشین اور ٹرانسفارمروں کو چھپاتے رہے اب پرائیویٹ لوگوں کے زریعے انہیں تقسیم کیا جا رہا ہے ہم نیب سے سوال کرتے ہیں کہ اربوں روپے کرپشن کرنے والوں کے خلاف کاروائی کیوں نہیں کی جاتی ہے آج سوشل میڈیا کا دور ہے لوگ با شعور ہو چکے ہیںچند ٹرانسفارمروں ،سلائی مشینوں اور واٹر سپلائی کے بوروں سے انہیں نہیں خریدا جا سکتا اربوں روپے علاقے کے ترقی کے لئے آئے مگر عوام پر خرچ ہونے کے بجائے کرپشن کے نظر ہو گئے علاقہ صحت ،تعلیم ،پینے کا صاف پانی جیسے بنیادی مسائل کا شکار ہیں ڈھاڈارو کے حوالے سے بی این پی (عوامی ) کے مرکزی صدر کا کہنا تھا کہ ڈھاڈارو بلوچستان کا علاقہ ہے اس علاقے کو الیکشن کمیشن آف پاکستان نے سندھ کے حلقہ انتخاب میں شامل کرنا افسوسناک عمل ہے الیکشن کمیشن دو صوبوں کے درمیان دوریاں پیدا کرنے کے بجائے اپنی غلطی تسلیم کریں اور ان علاقوں کو دوبارہ ضلع خضدار میں شامل کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کریں اس مسلے پر ہم اپنے لوگوں کے ساتھ ہیں ہم کبھی یہ اجازت نہیں دئینگے کہ ہمارے علاقوں کو دوسرے صوبوں میں شامل کریں ۔

متعلقہ عنوان :