پاکستان میں خوردنی تیل کی سالانہ مقامی پیداوار 5لاکھ ٹن ، کھپت40 لاکھ ٹن ہے

جمعرات اپریل 09:50

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 اپریل2018ء) پاکستان میں خوردنی تیل کی سالانہ کھپت40لاکھ ٹن کے قریب ہے جبکہ خوردنی تیل کی مقامی پیداوار5 لاکھ ٹن ہے اس لئے خوردنی تیلکی قومی ضروریات کی تکمیل کیلئے درآمدات پر انحصار کرنا پڑتا ہے۔ صوفی گروپ آف انڈسٹریز کے حکام نے کہا ہے کہ ملک میں خوردنی تیل کی پیداوار بڑھا کر سالانہ اربوں ڈالرکی بچت کی جاسکتی ہے جس کے تیل دار اجناس کے زیر کاشت رقبہ میں اضافہ اور پیداوار کے حامل بیجوں کے استعمال سمیت جدید زرعی ٹیکنالوجی سے استفادہ کیلئے اقدامات کی ضرورت ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ گذشتہ مالی سال کے دوران پاکستان نی26 لاکھ28 ہزار ٹن کے قریب پام آئل درآمد کیا تھا جس کیلئے قومی خزانے سے 1.905 ارب ڈالرکی ادائیگیاں کی گئی تھیں۔ انہوں نے کہا کہ گذشتہ مالی سال2017ء کے دوران پام آئل کی درآمدات مالی سال2016ء کے مقابلہ میں13فیصد تک بڑھی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مالی سال2017ء کے دوران سویا بین آئل کی درآمدات97 ہزار280 ٹن رہی تھیں جن کی مالیت12کروڑ 27 لاکھ85 ہزار ٹن تھی۔ انہوں نے کہا کہ خوردنی تیل کی درآمدات میں کمی اور تیل دار اجناس کی قومی پیداوار میں اضافہ سے قیمتی زرمبادلہ کی بچت کے ساتھ ساتھ قومی خزانے پر ادائیگیوں کے دبائو کو بھی کم کیا جاسکتا ہے۔