آئندہ مالی سال کے فنانس بل کی تیاری حتمی مرحلے میں داخل

سیلز ٹیکس کی شرح17 فیصد ،سپر ٹیکس برقرار رکھے جانے ، نان فائلر پر پلاٹ خریدنے پر پابندی کے فیصلے کا بھی امکان نان فائلرز کیلئے کاروباری لاگت بڑھانے کیلئے ٹیکس ‘ ڈیوٹی کی شرح بڑھانے ،ودہولڈنگ ٹیکس کی شرح بھی برقرار رکھے جانے کا امکان ہے

جمعرات اپریل 12:51

آئندہ مالی سال کے فنانس بل کی تیاری حتمی مرحلے میں داخل
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 اپریل2018ء) آئندہ مالی سال کے فنانس بل کی تیاری حتمی مرحلے میں داخل ہوگئی ،سیلز ٹیکس کی شرح17 فیصد اور امیروں پر سپر ٹیکس برقرار رکھے جانے کا امکان ہے۔نجی ٹی وی نے ذرائع کے حوالے سے کہا ہے کہ وزیراعظم کی ہدایت کی روشنی میں وفاقی محکمہ برائے محاصل کے اعلی حکام سرجوڑ کر بیٹھے ہیں اور جائزہ لے رہے ہیں کہ کس شعبے پر کتنا ٹیکس عائد کیا جائے گا اور کس کو کتنا ریلیف ملے گا۔

(جاری ہے)

آئندہ مالی سال کے دوران ایف بی آر کی ٹیکس وصولیوں کا ہدف4500 ارب روپے کے لگ بھگ مقرر کرنے کی تیاریاں کی جارہی ہیں۔ذرائع کے مطابق آئندہ مالی سال کے دوران سیلز ٹیکس کی شرح 17 فیصد اور امیر طبقے پر عائد سپر ٹیکس کا نفاذ برقرار رکھے جانے کا امکان ہے۔جبکہ نان فائلرز کیلئے کاروباری لاگت بڑھانے کیلئے ٹیکس اور ڈیوٹی کی شرح بڑھانے اور نان فائلر پر پلاٹ خریدنے پر پابندی کے فیصلے کا بھی امکان ہے۔ذرائع کا کہنا ہے نان فائلرز پر بینکوں کے ذریعے لین دین پر ودہولڈنگ ٹیکس کی شرح .4فیصد بھی برقرار رکھے جانے کا امکان ہے۔

متعلقہ عنوان :