لیبیا کے آرمی چیف اورمشرقی علاقے کے گورنر قاتلانہ حملے میں بال بال بچ گئے

جنرل الناظوری کے قافلے کو بنغازی شہر میں بارود سے بھری ایک کار کے ذریعے نشانہ بنانے کی کوشش کی گئی،فوجی حکام

جمعرات اپریل 14:45

طرابلس(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 اپریل2018ء) لیبیا کے آرمی چیف اور مشرقی علاقے کے گورنر عبدالرزاق الناظوری قاتلانہ حملے میں بال بال بچ گئے ۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق جنرل الناظوری کے قافلے کو بنغازی شہر میں بارود سے بھری ایک کار کے ذریعے نشانہ بنانے کی کوشش کی گئی تھی۔لیبی فوج کے شعبہ اطلاعات کی طرف سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ بنغازی میں سید خلیفہ کے مقام پر بارود سے بھری ایک کار سڑک کے کنارے کھڑی کی گئی تھی۔

(جاری ہے)

جیسے ہی آرمی چیف کا قافلہ وہاں سے گذرا کار زور دار دھماکے سے پھٹ گئی۔ تاہم جنرل الناظوری اس حملے میں محفوظ رہے ہیں۔خیال رہے کہ لیبی فوج کے سربراہ جنرل خلیفہ حفتر کے بعد جنرل الناظور کو دوسرا اہم ترین فوجی عہدیدار سمجھا جاتا ہے۔ چند روز قبل جنرل حفتر نے مشرقی لیبیا میں دہشت گردوں کے آخری گاڑی درنہ شہر میں فوجی کارروائی کی دھمکی دی تھی، تاہم جنرل حفتر خود شدید بیمار ہیں اوران کی صحت کے حوالے سے مختلف قیاس آرائیاں کی جا رہی ہیں۔