مودی بھارت کا مونی بابا،ملک چپ،باہر جاکرفرفربولتے ہیں،شیوسینا کی تنقید

بھارت کا درالحکومت دہلی سے نیویارک، لندن، ٹوکیو یاپیرس منتقل کردیاجائے تاکہ مود ی کو باہر نہ جانا پڑے،ترجمان

ہفتہ اپریل 12:30

نئی دہلی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 اپریل2018ء) بھارتی انتہاپسند تنظیم شیوسینانے وزیراعظم مودی کو بھارت کا مونی بابا قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ وہ بیرونی دوروں پر جاتے ہیں لیکن باتیں ملک میں ہونے والی جنسی زیادتیوں اور کرپشن کی کرتے ہیں۔جس کی وجہ سے دنیا یہ سمجھتی ہے کہ بھارت ایک محفوظ ملک نہیں ہے۔

(جاری ہے)

بھارتی ٹی وی کے مطابق شیوسینا کے ایک ترجمان نے کہاکہ بھارت کا درالحکومت نیودہلی سے نیویارک، لندن، ٹوکیو یاپیرس منتقل کردیا جائے اور دہلی کو ایک ایسے فلمی سیٹ میں تبدیل کر دیا جائے کہ وہ کسی غیرملکی شہر کا منظر پیش کرنے لگے۔

انہوں نے کہاکہ مودی بھارت کے مونی بابا ہیں۔وہ بھارت میں تو بولتے نہیں لیکن جب غیرملکی دورے پر جاتے ہیں تو فرفر بولنے لگتے ہیں۔حالانکہ انہیں مموہن سنگھ کے مشورے پر عمل کرتے ہوئے بھارت میں زیادہ بولنا چاہیے۔