نیب خیبر پختونخوا نے ٹی ایم اے نوشہرہ اور محکمہ ٹوراِزم کارپوریشن کے ملازمین کیخلاف بدعنوانی کی تحقیقات کی منظوری دیدی

اتوار اپریل 23:21

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 اپریل2018ء) قومی احتساب بیورو خیبر پختونخوا کے ریجنل بورڈ کا اجلاس پشاور میں منعقدہوا،فرمان اللہ خان ڈائریکٹر جنرل قومی احتساب بیورو، خیبر پختونخوا کی زیر صدارت منعقدہ اجلاس میں ڈائریکٹرز، ایڈیشنل ڈائریکٹرز، ڈی پی جی اے ،کیس آفیسر، سینئر قانونی مشیر کے علاوہ متعلقہ افسران نے شرکت کی۔اجلاس میںمختلف عوامی شکایات کا نوٹس لیتے ہوئے تحقیقات کے احکامات جاری کیے گئے۔

اجلاس میں محکمہ ٹوراِزم کارپوریشن خیبر پختونخوا کے ملازمین کے خلاف بدعنوانی کی تحقیقات کی منظوری دے دی،ملزمان پر الزام ہے کہ انہوں نے قانون کی خلاف ورزی کر تے ہوئے محکمہ ٹوراِزم کارپوریشن خیبر پختونخوامیں غیر قانونی بھرتیاں کی۔ اجلاس میں دوسری انکوائری ڈسڑک ایجوکیشن آفیسر (زنانہ)ڈی آئی خان کے خلاف بدعنوانی اور اختیارات کے ناجائز استعمال کی منظوری دی۔

(جاری ہے)

ان پر الزام ہے کہ انہوں نے قانون کی خلاف ورزی کر تے ہوئے ڈسڑک ایجوکیشن آفیسر (زنانہ)ڈی آئی خا ن میں مختلف کیڈر کی غیر قانونی بھرتیاں کی۔ اجلاس میں ایڈمنسٹریٹو آفسر ، ٹی ایم اے نوشہرہ کے خلاف بدعنوانی اور اختیارات کے ناجائز استعمال کی تحقیقات کی منظوری دی۔ان پر الزام ہے کہ انہوں نے قانون کی خلاف ورزی کر تے ہوئے غیر قانونی بھرتیاں کی اور ٹیکس جمع کرنے کے مختلف ٹھیکے اپنے فرنٹ مین کو دئیے۔

علاوہ ازیں اجلاس میں عمر حیات، سینئر آڈٹر ، ڈسٹرکٹ ٹاکاؤنٹس آفیسرضلع شانگلہ کے خلاف آمدن سے زائد اثاثے بنانے پر ضمنی ریفرنس کی منظوری دی۔ڈی جی نیب نے عہد کیا ہے کہ جسٹس جاوید اقبال چیئرمین نیب کی فراہم کر دہ احکامات کی روشنی میںبدعنوانی کے روک تھام کے لئے نیب کے پی، صوبے سے کرپشن کے ناسور کو جڑ سے اُ کھاڑنے کے لئے پر عزم ہے۔ اور قانون کے مطابق بلا امتیاز احتساب کو یقینی بنانے کے لئے کو شاں ہے۔ کیونکہ یہ صرف ہماری اخلاق اور سماجی ذمہ داری ہی نہیں بلکہ ہماری والی نسلوں کی روشن مستقبل کی ضمانت بھی ہے۔

متعلقہ عنوان :