اب صرف نئی اورمنفردکہانی والی فلمیں ہی سینما گھروں کی رونقیں بحال کرسکیں گی، اکبرگل

جمعہ اپریل 13:10

خالق نگر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 اپریل2018ء) پاکستان فلم انڈسٹری کے معروف اداکاراکبرعلی گل کا کہنا ہے کہ اپنا پیغام اورپاکستان کا سافٹ امیج پوری دنیا تک پہنچانے کے لیے فلم بہترین ذریعہ ہے۔ اکبرعلی گل نے گزشتہ روزفلم سچی مچی کے سیٹ پر’’این این آئی‘‘سے خصوصی گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں اچھی فلمیں بن رہی ہیں، نوجوان فلم میکربڑی محنت کے ساتھ کام کررہے ہیں لیکن اس نئے سفرمیں اب حکومت کی سپورٹ ضروری ہے۔

دنیابھرمیں جہاں بھی فلمیں بنائی جاتی ہیں، وہاں پرحکومت فلم میکرز کوسہولیات فراہم کرتی ہے۔ لیکن بدقسمتی سے ہمارے ہاں اس پرکچھ خاص توجہ نہیں دی جاتی۔اکبرعلی گل کا مزیدکہنا ہے کہ کوپروڈکشن وقت کی اہم ضرورت ہے لیکن اس دیگرممالک کے ساتھ بھی فلم سازی ہونی چاہیے کیونکہ اپنا پیغام اورپاکستان کا سافٹ امیج پوری دنیا تک پہنچانے کیلیے فلم بہترین میڈیم ہے۔

(جاری ہے)

اکبرعلی گل کا کہنا ہے کہ فلم بنانا آسان کام نہیں کیونکہ پروڈیوسرکو بے پناہ مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے، حکومت تعاون کے ساتھ ساتھ ٹکٹ کی شرح کم کرے، اگر انڈسٹری کو آگے بڑھانا ہے توفلم میکرکی مددکی جائے، پاکستان میں بہت ٹیلنٹ ہے، دیگرممالک کیساتھ مشترکہ فلم سازی کے لیے حکومت کو اقدامات کرنے کی ضرروت ہے، شائقین ہمیشہ اچھی فلموں کی حوصلہ افزائی کرتے ہیں۔اداکارنے مزید کہا کہ میں فلم کے شعبے کی اہمیت سے خوب واقف ہوں، مگرجہاں تک بات فلم کی کہانی کی ہے تواب صرف نئی اورمنفردکہانی والی فلمیں ہی سینما گھروں کی رونقیں بحال کرسکیں گی۔

متعلقہ عنوان :