دالبندین میں تین سال کی بندش کے بعد افغانی ماربل بحال

جمعہ مئی 23:13

دالبندین(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 مئی2018ء) دالبندین میں تین سال کی بندش کے بعد افغانی ماربل بحال تفصیلات کے مطابق گذشتہ تین سالوں سے افغانی ماربل پر ایف بی ؂آر نے ٹیکس کی شرع بڑا کر بند کردیا تھا سینٹ چیئر مین حاجی صادق سنجرانی اور صوبائی وزیر میر امان اللہ خان نوتیزئی کی کوششوں سے ایف بی آر نے ٹیکس کی شرع کم کرکے افغانی ماربل اونیکس سے پابندی ہٹا دیا ۔

(جاری ہے)

گزشتہ روز دالبندین کسٹم حکام کے پاس پڑے افغانی ماربل کو ٹرالر میںڈال کر صوبائی وزیر سخی میرامان اللہ خان نوتیزی کے بھائی ملک سمیع اللہ نوتیزی،میر فیصل خان نوتیزی مائنز اونر عبد الباسط محمد حسنی،راشد کبدانی نے باقاعدہ افتتاح کردیا گیا، اس موقع پر ملک سمیع اللہ نوتیزی میر فیصل خان نوتیزی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ تین سال سے افغانی پتھر پر زیادہ ٹیکس ہونے کہ وجہ سے بند پڑا تھا جس سے مائنز اونرز سمیت علاقے کے بے روزگار ی میں اضافہ ہوگیا تھا ہم سینٹ چیئرمین صادق سنجرانی،برگیڈیئر پاک آرمی عبد السمیع اور صوبائی وزیر میر امان اللہ خان نوتیزی کے انتہائی مشکور ہے جنھوں نے ایف بی آر سے بات کرکے فی ٹن افغانی پتھر پر مناسب ٹیکس لگا کر بحال کردیا گیا جس سے علاقے کء مائنز اونرز سمیت مزدوروں اور خصوصا کاروباری افراد کو کافی فائدہ ہوگا میر فیصل خان نوتیزی کا کہنا تھا پاک فوج کے انتہائی مشکورہے جنھوں نے اس مسلے میں اہم کردار ادا کیا اور امید کرتے ہیں حکومتی سطح پر یہاں پر مائنزکی فیکٹریاں بنائی جائے تاکہ چھوٹے مائنز اونرز اپنے پتھر ادھری پہنچا دے جس سے علاقے میں بے روزگار نوجوانوں کو کافی فروغ ملے گا مائنز اونر عبد الباسط محمد حسنی کا کہنا تھا تین سال بعد افغانی پتھر بند ہوجانے کی وجہ سے مائنز اونرز کو اربوں روپے کا نقصان ہوا مائنز اونرز کے ایک وفد نے کسٹم کلکٹر سے ملاقات کرکے اس مسلے سے آگاہ کیا ہم تمام لوگوں کے انتہائی مشکور ہے جنھوں نے ٹیکس کو بیس ہزار سے کم کرکے آٹھ ہزار چارسو روپے فی ٹن کر دیا اس موقع پر ملک سمیع اللہ نوتیزی،میر فیصل خان نوتیزی،راشد کبدانی،خلیل نوتیزئی،انجمن تاجران کے رہنما محمد الیاس ساسولی ودیگر مائنز اونرز نے ایک دوسرے کو مٹھائی کھلائی اور خوشی کا اظہار کیا اور دعا خیر بھی کی گئی

متعلقہ عنوان :