لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب بھر کے پی سی ایس افسروں کی ترقیوں کا طریق کار کالعدم قرار دیدیا

پی ایس سی افسران کی پرموشن کا کوٹہ بڑھانے کی اپیلیں منظور ،سروس کوٹہ 37 فیصد کر دیا گیا ،پی ایم ایس افسران کے کوٹہ میں کمی

جمعرات مئی 20:26

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب بھر کے پی سی ایس افسروں کی ترقیوں کا طریق کار کالعدم قرار دیدیا۔چیئرمین پنجاب سروس ٹربیونل شعیب سعید کی سربراہی میں فل بینچ نے پنجاب سیکرٹریٹ سروس کے افسران کی درخواستوں پر فیصلہ سناتے ہوئے ساجد بشیر و دیگر کی اپیلیں منظور کرلیں۔

(جاری ہے)

درخواست گزاروں کے وکیل ملک اویس خالد نے موقف اختیار کیا کہ پی سی ایس افسروں کی تعداد کے مطابق پروموشن کوٹہ درست نہیں، 452افسروں کو تعداد کے مطابق کوٹہ مختص نہیں کیا گیا جبکہ پی ایم ایس افسران کی ترقی کیلئے زیادہ کوٹہ دیا گیا۔

پنجاب حکومت کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ پی ایس سی افسران کے پاس فیلڈ کا تجربہ نہ ہونے کی وجہ سے ان کا پرموشن کوٹہ کم رکھا گیا۔ ٹربیونل نے دلائل سننے کے بعد پی ایس سی افسران کی پرموشن کا کوٹہ بڑھانے کیلئے اپیلیں منظور کر لیں اور سروس کوٹہ 37فیصد کر دیا گیا جبکہ پی ایم ایس افسران کا کوٹہ70سے کم کر کے 63فیصد کر دیا گیا۔