وزیر اعلیٰ پرویز خان خٹک ایک قومی اور دوصوبائی حلقہ سے الیکشن لڑیں گے

عام انتخابات2018ء کے لیے پاکستان تحریک انصاف نے نوشہرہ سے ممکنہ امیدواروں کافیصلہ کرلیا

منگل مئی 20:03

وزیر اعلیٰ پرویز خان خٹک ایک قومی اور دوصوبائی حلقہ سے الیکشن لڑیں ..
نوشہرہ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 مئی2018ء) 2018 کے عام انتخابات کے لیے پاکستان تحریک انصاف نے نوشہرہ سے ممکنہ امیدواروں کا فیصلہ کرلیا۔ وزیر اعلیٰ پرویز خان خٹک ایک قومی اور دوصوبائی حلقہ سے الیکشن لڑیں گے۔ جبکہ دیگر ایک قومی اور تین صوبائی حلقہ کے امیدوار کے ٹکٹوں کافیصلہ بھی کرلیاگیا۔ تفصیلات کے مطابق انتہائی باخبر ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف پارلیمانی بورڈ نے درخواستوں پر غور شروع کرلیا اور ہر ضلع کی سطح پر فیصلے شروع کرلیے ہیں۔

اس ضمن میں گزشتہ تین روز سے اجلاسوںکا سلسلہ جاری ہے اور نئی حلقہ بندیوں پر مضبوط امیدوا رکھڑے کرنے کا فیصلہ کیاگیا اس ضمن میں دوسرے سیاسی جماعتوں سے جو الیکٹبیل لوگ پی ٹی آئی میں شامل ہوئے ہیں ان پر بھی غور جاری ہے اور مضبوط امیدواروں کو تحریک انصاف کھڑ اکر ے گی اس میں یہ بھی دیکھا جائے کہ مضبوط برادری اور ایسے امیدوارجو اپنے چھ سات ہزار ووٹ رکھتے ہوںکو ترجیح دی جائے گی نوشہرہ کے حوالے سے ذرائع نے کہا کہ وزیر اعلی پرویز خٹک اپنے پرانے آبائی حلقہ پی کی64 کے ساتھ اس مرتبہ پی کے 61 اور این اے 25 سمیت تین حلقوںسے انتخاب لڑیں گے۔

(جاری ہے)

جبکہ اے این 26 سے ڈاکٹر عمران خٹک پی کے 62 سے ادریس خٹک، پی کے 63 سے میاں جمشید الدین کاکاخیل اور پی کے 65 سے میاں خلیق الرحمن کو پارٹی ٹکٹ دینے کا فیصلہ کرلیاگیا۔ واضح رہے کہ پی کے 61 کے تحریک انصاف کے اٹھ درخواستیں ائی جن میں گلریز حکیم خان، ساجد مشوانی، زر عالم خان، ملک ابرار، سکندر خان، حسن خان اور طہیم الدین بہرہ مند نے پارٹی ٹکٹ کے لیے درخواستیں دی تھی ان تمام کے ساتھ وزیر اعلیٰ نے کئی ملاقاتیں کی۔

مگر اتفاق رائے نہ ہوسکا۔ اورسب نے اس بات پر اتفاق کیا کہ وزیر اعلی پرویز خان خٹک خو د یا اپنے خاندان سے کسی کو کھڑا کریں سب اس کاساتھ دیں گے۔چنانچہ اس کے پیش نظر پارٹی کو متحد رکھنے کے لیے پرویز خان خٹک کو خود اس حلقے سے الیکشن لڑنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔دیگر حلقوں پر وزیر اعلی پرویز خٹک نے جن جن لوگوںنے درخواستیں دی ہے ان کے ساتھ مذاکرات کرکے انہیں پارٹی کے امیدواروں کے حق میں راضی کراکر ان کے اختلاف ختم کر دئیے۔