خواجہ آصف کی تاحیات نا اہلی کالعدم قرار؛ احسن اقبال کا رد عمل بھی سامنے آ گیا

حق اور سچ کی بلاخر فتح ہوتی ہے! پی ٹی آئی جو کام ووٹ کی طاقت سے خود نہیں کر سکتی وہ چاہتی ہے کہ عدالتیں اس کے لئے وہ کام کردیں۔ ایسا نہیں ہو سکتا، پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما احسن اقبال کا ٹویٹ

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعہ جون 12:22

خواجہ آصف کی تاحیات نا اہلی کالعدم قرار؛ احسن اقبال کا رد عمل بھی سامنے ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ یکم جون 2018ء) : سپریم کورٹ نے سابق وفاقی وزیر خواجہ آصف کے تاحیات نا اہلی کے فیصلے کو کالعدم قرار دے دیا ۔ تاحیات نا اہلی کالعدم ہونے کے تحت خواجہ آصف عام انتخابات 2018ء میں حصہ لے سکیں گے۔ گذشتہ روزسپریم کورٹ میں خواجہ آصف کی نااہلی کے خلاف اپیل کی سماعت ہوئی۔ خواجہ آصف نے پی ٹی آئی رہنماء عثمان ڈار کی درخواست پراسلام آباد ہائیکورٹ کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چینلج کر رکھا تھا۔

خواجہ آصف کی نا اہلی کو کالعدم قرار دینے کے فیصلے سے متعلق پاکستان مسلم لیگ ن کے سینئیر رہنما احسن اقبال نے بھی اپنے رد عمل کا اظہار کیا ہے۔اور پاکستان تحریک انصاف کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے احسن اقبال نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا ہے کہ حق اور سچ کی بلاخر فتح ہوتی ہے! پی ٹی آئی جو کام ووٹ کی طاقت سے خود نہیں کر سکتی وہ چاہتی ہے کہ عدالتیں اس کے لئے وہ کام کردیں۔

(جاری ہے)

ایسا نہیں ہو سکتا۔یاد رہے کہ اسلام آباد ہائیکورٹ نے 26 اپریل کو تحریک انصاف کے رہنما عثمان ڈار کی درخواست پر فیصلہ سناتے ہوئے وزیر خارجہ خواجہ آصف کو تاحیات نااہل قرار دیا تھا۔ اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس اطہر من اللہ، جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پر مشتمل تین رکنی لارجر بینچ نے فیصلہ سنایا جس میں کہا گیا کہ خواجہ آصف کو متحدہ عرب امارات کی وزارت محنت کی جانب سے لیبر کیٹیگری کا شناختی کارڈ جاری ہوا اور ملازمت کی وجہ سے ہی انہیں اقامہ بھی جاری ہوا،2013 کے عام انتخابات میں کاغذات نامزدگی جمع کرواتے وقت یہملازمت ہی خواجہ آصف کا بنیادی پیشہ تھا۔

تاہم آج سپریم کورٹ میں جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں تین رکنی خصوصی بنچ نے خواجہ آصف کی تاحیات نا اہلی کے خلاف دائر اپیل کی سماعت کی ۔ اور سماعت میں سپریم کورٹ نے خواجہ آصف کی تاحیات نا اہلی کو کالعدم قرار دے دیا۔ کیس کا تفصیلی فیصلہ بعد میں جاری کیا جائے گا۔