انتخابات 2018ء ، نادرا نے دھاندلی روکنے کیلئے ایپ تیار کر لی

ایپ تمام پریذائیڈنگ افسران کے موبائل فونز میں ہو گی جس کی مدد سے وہ انتخابی نتائج کے حوالے سے تمام ڈیٹا فی الفور براہ راست الیکشن کمیشن کو منتقل کر دیں گے

پیر جون 18:30

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 جون2018ء) نادرا نے عام انتخابات 2018ء میں دھاندلی روکنے کے لئے الیکشن کمیشن کو موبائل اپیلی کیشن بنا کر دے دی ہے۔ یہ ایپ تمام پریذائیڈنگ افسران کے موبائل فونز میں ہو گی جس کی مدد سے وہ انتخابی نتائج کے حوالے سے تمام ڈیٹا فی الفور براہ راست الیکشن کمیشن کو منتقل کر دیں گے۔ ذرائع کے مطابق اس سسٹم سے فارم 14 میں ردوبدل ممکن نہیں ہو سکے گا۔

فارم 14 میں پارٹیوں کے امیدواروں اور نتائج کی تفصیلات ہوتی ہیں۔ فارم 14 پر یہ بھی لکھا ہوتا ہے کہ کس امیدوار کو کتنے ووٹ پڑے، کتنے مسترد ہوئے اور کتنے منسوخ ہوئے۔ ذرائع نے بتایا کہ نادرا کی اس موبائل ایپ کے ذریعے پولنگ ختم ہونے کے 1 سے 2 گھنٹے کے اندر ہر پولنگ سٹیشن اپنا رزلٹ الیکشن کمیشن کو بھیج دے گا جس کے بعد رزلٹ کی کاپی ریٹرننگ افسر کو بھجوائی جائے گی۔

موبائل ایپ کی وجہ سے پریذائیڈنگ افسر کی طرف سے ریٹرننگ افسر کو بھیجے گئے نتائج میں ردوبدل نہیں ہو سکے گا اور اگر کہیں ردوبدل ہوا تو فوری پتہ چل سکے گا کہ یہ کس نے کیا ہے۔ ذرائع کے مطابق، نادرا نے ملک بھر میں پریذائیڈنگ افسروں کو ٹریننگ دینا شروع کر دی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ موبائل فونز میں ایپس کو چلانے کے لئے نیٹ ورک سے منسلک رکھنے کی ذمہ داری الیکشن کمیشن کی ہو گی۔

الیکشن کمیشن کی طرف سے اس بات کو یقینی بنایا جائے گا کہ ایسے علاقے جہاں انٹرنیٹ کے حوالے سے مشکلات درپیش ا? سکتی ہیں، وہاں ان کے حل کے لئے اقدامات کئے جائیں۔ اس حوالے سے جب "این این آئی" نے نادرا ترجمان فائق علی چاچڑ سے استفسار کیا تو ترجمان نے بتایا کہ ہم نے سسٹم بنا کر الیکشن کمیشن کے سپرد کر دیا تھا اور اب اس سسٹم کے استعمال کے حقوق بھی الیکشن کمیشن کے پاس ہیں اب نادرا کا کوئی کردار نہیں۔

Your Thoughts and Comments