لاہور ایپلٹ ٹریبونلز میں سماعت: پی ٹی آئی کے 5 اقلیتی امیدواروں کی اپیلیں خارج

ریٹرننگ افسران کے فیصلے برقرار

جمعرات جون 21:30

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 جون2018ء) ریٹرننگ افسران کی جانب سے امیدواروں کے کاغذات نامزدگی مسترد ہونے کے خلاف ایپلٹ ٹریبونلز میں سماعت کا سلسلہ جاری ہے جب کہ لاہور کے ٹربیونلز نے تحریک انصاف کے اقلیتی امیدواروں کی اپیلیں خارج کردیں۔۔لاہور کے ایپلٹ ٹربیونل کے جسٹس فیصل زمان خان نے تحریک انصاف کے اقلیتی امیدواروں کی اپیلوں پر محفوظ کیا گیا فیصلہ سناتے ہوئے ریٹرننگ افسران کے فیصلے برقرار رکھے ہیں۔

ایپلٹ ٹربیونل نے پی ٹی آئی اقلیتی امیدواروں کی تمام اپیلیں خارج کردیں، پی ٹی آئی کی جانب سے مہندر سنگھ پال، یوڈسٹر چوہان، ہارون گل، اعجاز مسیح اور پیٹر گل نے ایپلٹ ٹربیونل میں اپیل دائر کی تھی۔اپیل کنندہ کا اپنی درخواستوں میں کہنا تھا کہ تحریک انصاف نے اقلیتی امیدواران کی لسٹ مقررہ وقت کے بعد الیکشن کمیشن میں جمع کرائی اور امیدواروں کی لسٹ نہ ہونے کے باعث کاغذات نامزدگی مسترد کردیے گئے۔

(جاری ہے)

اپیل کنندہ نے ایپلٹ ٹربیونل سے اپیل کی تھی کہ لسٹ اب الیکشن کمیشن میں جمع ہوگئی ہے اس لیے عدالت الیکشن میں حصہ لینے کا اہل قرار دیتے ہوئے ریٹرننگ افسر کا فیصلہ کالعدم قرار دے جائے۔۔الیکشن ٹربیونل نے لاہور کے حلقہ این اے 131 سے مسلم لیگ (ق) کی امیدوار زیبا احسان کی اپیل پر بھی فیصلہ محفوظ کرلیا۔اپیل کنندہ کا درخواست میں کہنا تھا کہ ریٹرننگ آفیسر نے حقائق کے برعکس کاغذات مسترد کیے، آر او نے تجویز کنندہ کے حلقے سے نہ ہونے پر کاغذات مسترد کیے تاہم تجویز کنندہ حلقے میں ہی ووٹ کاسٹ کرتا رہا ہے۔

اپیلیٹ ٹریبونلز میں کاغذات مسترد یا منظور کیے جانے کے خلاف آ ج جمعہ تک اپیلیں دائر کی جاسکیں گی۔ بلوچستان میں اپیلیٹ ٹریبونلز ہائیکورٹ کے جج جسٹس ہاشم کاکڑ اور جسٹس اعجاز سواتی پر مشتمل ہیں۔یاد رہے کہ گزشتہ روز اپیلیٹ ٹریبونلز میں 20 اپیلیں دائر کی گئی تھیں۔