تحریک انصاف کے احتجاجی کارکن ڈٹ گئے

پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان کی رہائش گاہ کے باہر ٹکٹوں کی تقسیم پر ناراض کارکنان کاپانچویں روز بھی دھرنہ جاری ہے

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعہ جون 13:50

تحریک انصاف کے احتجاجی کارکن ڈٹ گئے
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 22 جون 2018ء) : پاکستان تحریک انصاف میں ٹکٹوں کی تقسیم کے حوالے سے پارٹی کارکنان نے شدید احتجاج کیا ہے۔پارٹی کارکنان کا کہنا ہے کہ عمران خان نے پارٹی کارکنان سے زیادہ الیکٹیبلز کو اہمیت دی ہے۔جب کہ پارٹی کارکنان نے پارٹی کے لیے بہت قربانیاں دی ہیں اور وہ مشکل وقت میں عمران خان کے ساتھ کھڑے رہے۔اس تمام صورتحال میں پی ٹی آئی کارکنان نے بنی گالا کے باہر احتجاج کیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے چئیرمین عمران خان کی رہائش گاہ بنی گالہ میں پارٹی کارکنان کا احتجاج پانچویں دن بھی جاری ہے۔ کارکنان نے عام انتخابات کے لیے پارٹی ٹکٹوں کی تقسیم کے خلاف دھرنا دے رکھا ہے،،احتجاج کرنے والے ان کارکنان کا تعلق این اے 154 ملتان اور این اے 12 بٹگرام سے ہے۔

(جاری ہے)

احتجاج کرنے والے کارکنوں کا کہنا ہے کہ انتخابات میں ٹکٹوں کی تقسیم کے دوران نظریاتی ورکرز کو نظر انداز کر دیا گیا، جب تک مطالبات پورے نہیں ہوتے، یہیں بیٹھیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ سکندر بوسن کو پارٹی ٹکٹ الاٹ کرنا پارٹی کے کارکنان کو منظور نہیں ہے۔یاد رہے دو روز قبل عمران خان نے احتجاجی کارکنان سے خطاب کیا تھا اور کہا تھا کہ یں اپنے بورڈ کے ساتھ بیٹھ کے انصاف اور دیانتداری سے جو فیصلہ کروں گا چاہے جتنی بھی پبلک آ جائے وہ میں تبدیل نہیں کروں گا۔۔عمران خان کا کہنا تھا کہ آپ پچاس لوگ ہیں اگر دس ہزار لوگ بھی آ جائیں تو میں اپنا فیصلہ تبدیل نہیں کروں گا۔

آپ لوگ مجھے اچھی طرح جانتے ہیں۔ اور اگر آج میں نے آپ لوگوں کی بات مان لی تو کل پچاس لوگ اور اکھٹے ہو جائیں گے،اس لیے میں وہی فیصلہ کروں گا جو پارلیمانی بوڑد میں فیصلہ ہو گا۔اس موقع پر پارٹی کارکنان کا کہنا تھا کہ خان صاحب آپ نے ہمیں سکھایا ہے کہ ان حکمرانوں کو بے نقاب کر نا ہے اور اب آپ انہی کو ٹکٹیں دے رہے ہیں۔یاد رہے کہ پی ٹی آئی اس بار ٹکٹوں کی تقسیم میں اپنے نظریاتی کارکنان سے زیادہ منتخب امیدواروں کو اہمیت دے رہی ہے۔

جس کی وجہ سے تحریک انصاف کو شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ تحریک انصاف کی طرف سے ملک کے طول و عرض سے پاکستان تحریک انصاف کے انتخابی امیدواروں اور ٹکٹ ہولڈرز کے ناموں کا اعلان کیا گیا تھا۔ اس مرحلے پر بڑے بڑے سیاسی لیڈروں کے سیاسی جانشینوں اور بیٹوں کو بھی نوازا گیا۔ صرف یہ ہی نہیں بلکہ بہت سے نئے آنیوالوں کو بھی نظریاتی کارکنان پر ترجیح دی گئی