الیکشن ملتوی ہونے کاخدشہ نہیں ہے ،ْ الیکشن 25جولائی کو ہی ہونگے ،ْ فاٹا میں قومی اسمبلی کے الیکشن ہونگے ،ْوزیر اطلاعات

آئین میں لکھا ہے فاٹا میں صوبائی اسمبلی کے الیکشن ایک سال بعد ہونگے ،ْ جب تک آئین میں لکھا ہے تب تک فاٹا میں صوبائی اسمبلی کے الیکشن کے حوالے سے از خود کچھ نہیں کر سکتا ،ْمیڈیا بہتری کیلئے ہماری رہنمائی کرے اور تجاویز دے ،ْ میڈیا سے گفتگو ،ْ تقریب سے خطاب ْہم چاہتے ہیں عام انتخابات صاف اور شفاف ہوں اور میڈیا آزادانہ کوریج کر سکے ،ْ عارف نظامی

پیر جون 15:30

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 جون2018ء) وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات علی ظفر نے کہاہے کہ الیکشن ملتوی ہونے کاخدشہ نہیں ہے ،ْ الیکشن 25 جولائی کو ہی ہونگے ،ْ فاٹا میں قومی اسمبلی کے الیکشن ہونگے ،ْآئین میں لکھا ہے فاٹا میں صوبائی اسمبلی کے الیکشن ایک سال بعد ہونگے ،ْ جب تک آئین میں لکھا ہے تب تک فاٹا میں صوبائی اسمبلی کے الیکشن کے حوالے سے از خود کچھ نہیں کر سکتا ،ْمیڈیا بہتری کیلئے ہماری رہنمائی کرے اور تجاویز دے ۔

پیر کو میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے انہوںنے کہا کہ الیکشن ملتوی ہونے کا کوئی خدشہ نہیں ،ْالیکشن بروقت اور پچیس جولائی کو ہی ہونگے ۔انہوںنے کہاکہ کچھ عرصہ قبل افواہیں چلی تھیں لیکن اب سب کو یقین ہو گیا ہے کہ الیکشن ہونگے ،ْفاٹا میں قومی اسمبلی کے الیکشن ہونگے ۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہاکہ آئین میں لکھا ہے کہ فاٹا میں صوبائی اسمبلی کے الیکشن ایک سال بعد ہونگے ۔

انہوںنے کہاکہ جب تک آئین میں لکھا ہے تب تک فاٹا میں صوبائی اسمبلی کے الیکشن کے حوالے سے از خود کچھ نہیں کر سکتا۔ قبل ازیں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سید علی ظفر نے کہاکہ پاکستان اور چین کے درمیان دوستی کی مثال نہیں ملتی ،ْپاکستان سے پی ای اے کی پہلی فلائٹ چاینہ میں لینڈ کی۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ پاکستان کو جب جب ضرورت پڑی چاینہ نے پاکستان کا ساتھ دیا ،ْسی پیک گہری دوستی کی ایک مثال ہے ،ْ دونوں ملک سی پیک سے مستفید ہوں گے ،ْپورا خطہ سی پیک سے مستفید ہونے جا رہا ہے ۔

انہوںنے کہاکہ کلچر کے بغیر کسی قوم کی کوئی شناخت نہیں ہوتی ،ْچین اور پاکستان آپس میں کلچرل پروگرام شروع کر رہے ،ْدونوں ملکوں کے نوجوان نسل کلچر سے فاہدہ اٹھائے گی۔ انہوںنے کہاکہ ایک دوسرے کو سمجھنے کے لیے کلچر کا اہم کردار ہے ۔ بیرسٹر سید علی ظفر انہوںنے کہا کہ پاکستان چین دوستی بے مثال ہے ،ْچین نے ہرضرورت کے وقت ساتھ د یا ،ْسی پیک پاکستان چین دوستی کی مثال ہے ،ْسی پیک سے دونوں ملکوں کو فائدہ ہوگا۔

نگران وفاقی وزیر اطلاعات بیرسٹر علی ظفر نے سی پی این ای کی تقریب سے خطاب سے کرتے ہوئے کہاکہ یہ درست ہے ہم کم مدت کیلئے آئے ۔انہوںنے کہاکہ کابینہ کے پہلے اجلاس میں متفقہ فیصلہ کیا کہ عام انتخابات میں ہر ممکن مدد کریں۔وفاقی وزیر نے کہاکہ قانون ہمیں ٹائم ٹو ٹائم بہت سے فیصلوں کا اختیار دیتا ہے۔انہوںنے کہا کہ ہمارا موقف ہے کے حکومت کو۔

شفاف انداز سے چلنا چاہئے۔انہوںنے کہاکہ حکومت کو شفاف انداز سے چلانے کیلئے میڈیا کو آن بورڈ لینا ضروری ہے ،ْنگراں حکومت کو صحیح معنوں میں غیر جانبدار رہنا ہے۔انہوںنے کہا کہ جمہوریت کو معاشی بدحالی عدم برداشت اور جھوٹی خبروں کے خطرات کاسامنا ہے ،ْ وفاقی وزیر اطلاعات نے کہ اکہ میڈیا بہتری کیلئے ہماری رہنمائی کرے اور تجاویز دے۔

۔ وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا کہ نگراں حکومت عام انتخابات کیلئے بہت کام کر رہی ہے۔انہوںنے کہاکہ نگراں حکومت نے جو اقدامات اٹھائے وہ دس پندرہ روز میں سب کے سامنے آ جائینگے۔وفاقی وزیر نے کہاکہ نگراں حکومت دو ماہ کیلئے آئی 12 12گھنٹے کام کر رہے ،ْ میڈیا سے متعلق تجاویز اوپن ہائوس میں رکھوں گا۔۔وفاقی ویر نے کہاکہ مسئلہ سمجھے بغیر اس کا حل ممکن نہیں ،ْشفافیت او ر غیر جانبداری ہمارا ہدف ہے ۔

انہوںنے کہاکہ ہماری غیر جانبداری نظر بھی آنی چاہیے ،ْوزارتوں کے حقائق عوام کے سامنے رکھیں گے ۔انہوںنے کہاکہ معاشی مساوات جمہوریت کیلئے ضروری ہے۔سی پی این ای کے صدر عارف نظامی کا تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ہم چاہتے ہیں عام انتخابات صاف اور شفاف ہوں اور میڈیا آزادانہ کوریج کر سکے۔