میری نااہلی سے اشارہ ملتا ہے مستقبل میں خلائی مخلوق بہت کچھ کرنے والی ہے، منظور حسین وسان

مستقبل میں بارگیننگ کی جائے گی۔ جو خلائی مخلوق کے ساتھ ہوگا انہیں مہلت ملے گی جو ضد کرے گا وہ باہر ہوگا پیپلز پارٹی کی اکثریت کو اقلیت میں تبدیل کرنے کی کوشش کی جارہی ہے، کاغذات نامزدگی مسترد ہونے کے بعد ردعمل کا اظہار

بدھ جون 23:21

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 جون2018ء) سابق صوبائی وزیر اور پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما منظور حسین وسان نے کہا ہے کہ میری نااہلی سے اشارہ ملتا ہے کہ مستقبل میں خلائی مخلوق بہت کچھ کرنے والی ہے، مستقبل میں بارگیننگ کی جائے گی۔ جو خلائی مخلوق کے ساتھ ہوگا انہیں مہلت ملے گی جو ضد کرے گا وہ باہر ہوگا، پیپلز پارٹی کی اکثریت کو اقلیت میں تبدیل کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کو کاغذات نامزدگی مسترد ہونے کے بعد اپنے ردعمل میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ میں نے ایک دو بار کہا تھا کہ ایسے حالات بھی ہوں لوگوں کے فارمز مسترد کئے جائیں گے۔ میری نا اہلی سے یہ اشارہ ملتا ہے کہ مستقبل میں خلائی مخلوق بہت کچھ کرنے والی ہے۔ منظور وسان نے کہا کہ مستقبل میں بارگیننگ کی جائے گی۔

(جاری ہے)

جو خلائی مخلوق کے ساتھ ہوگا انہیں مہلت ملے گی جو ضد کرے گا وہ باہر ہوگا۔

فارمز مسترد ہونے کے بعد اگر الیکشن جیت کر بھی آئیں گے تب بھی مسائل کھڑے کئے جائیں گے۔ اپیلیں درج کی جائیں گی تاکہ پی پی کی اکثریت کو اقلیت میں تبدیل کرنے کی کوشش کریں ماضی میں ایسا ہوتا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے یہ علم تھا اور میں کہتا آرہا تھا۔ پر یہ پتہ نہیں تھا کہ اس سے خود متاثر ہوں گا۔ میں سوچا تھا کہ بہت سے لوگ متاثر ہوں گے۔

پتا تھا کہ جی ڈی اے بنائی اسی لئے گئی ہے کہ خلائی مخلوق ان کی مدد کرے۔ منظور وسان نے کہا کہ جی ڈی اے کی پہلی ترجیح ہے کہ الیکشن ملتوی ہوں۔دوسری ترجیح انہیں سپورٹ دی جائے۔ ماضی کی طرح،تیسری دھاندلی کی جائے جس میں وہ کامیاب ہورہی ہے۔ انتخابات سے قبل افسران بھی جی ڈی اے کی خواہش پر تعینات ہورہے ہیں۔ افسران بھی ان کے رو بھی خود رہے ہیں۔

ڈی اے نے الطاف حسین والا رول اختیار کیا ہے ظلم بھی کرو اور رو بھی۔ منظور وسان نے کہا کہ جی ڈی اے،،پی ٹی آئی ،،ایم کیو ایم قوم پرست جماعتیں آگے چل کر پی پی پی کیلئے مشکلات پیدا کریں گی۔ پی پی پی کے کمزور امیدواروں کو دھمکیاں دیکر وفاداریاں تبدیل کرانے کی کوششیں کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ اقامہ کے کیس ہائی کورٹ میں زیر سماعت ہے جس کی بنیاد پر میرے کاغذات مسترد کئے گئے ،13اگست کو سماعت ہے۔

تمام سیاسی جماعتوں سے کہتا ہوں،،پاکستان نے پہلے ہی بہت کچھ سہا ہے، ایسے حالات پیدا نہ کئے جائیں جن سے نفرتیں پیدا ہوں۔ پہلے کہا تھا کہ جی ڈی اے اور دیگر جماعتیں خلائی مخلوق کی مدد سے آئی ہیں جو خود اعتراف کر رہی ہیں۔ وہ خود کہہ رہے ہیں ہمیں بلا کر یقین دلایا گیا کہ منظور وسان کے فارم مسترد ہوں گے ۔ شبیر بجارانی کے پارٹی چھوڑنے کے فیصلے پر حیران ہوا۔ ان کے تحفظات ضرور ہوں گے مگر یہ وقت نہیں تھا پارٹی چھوڑنے کا۔ انہوں نے کہا کہ شبیر بجارانی کے دائیں اور بائیں جو لوگ کھڑے تھے ان سے اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ خلائی مخلوق کا کردار ہے۔ ہوسکتا ہے پی پی میں مزید ایسے لوگ ہیں جو اچانک سرپرائز دیں۔