مسلم لیگ (ن) نے خواجہ برادران کی گرفتاری کیخلاف مذمتی قرارداد پنجاب اسمبلی میں جمع کرادی

نیب خواجہ برادران کیخلاف ایک بھی ثبوت عدالت میں پیش نہیں کر سکا،چیف جسٹس یکطرفہ احتساب کا نوٹس لیں‘مطالبہ

منگل دسمبر 16:55

مسلم لیگ (ن) نے خواجہ برادران کی گرفتاری کیخلاف مذمتی قرارداد پنجاب ..
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 دسمبر2018ء) مسلم لیگ (ن) نے خواجہ برادران کی گرفتاری کیخلاف مذمتی قرارداد پنجاب اسمبلی سیکرٹریٹ میں جمع کرادی جس میں چیف جسٹس آف پاکستان سے یکطرفہ احتساب کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا گیا ہے ۔(ن) لیگ کی کی رکن پنجاب اسمبلی حنا پرویز بٹ کی طرف سے جمع کروائی گئی قرار داد کے متن میں کہا گیا ہے کہ نیب کی جانب سے خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق کی گرفتاری انتہائی قابل مذمت ہے۔

نیب خواجہ برادران کیخلاف ایک بھی ثبوت عدالت میں پیش نہیں کر سکا۔اس کے باوجود خواجہ برادران کی گرفتاری عمل میں لائی گئی ہے۔نیب منتخب سیاستدانوں کو انتقام کا نشانہ بنارہا ہے۔ایسے حالات میں چیئر مین نیب کی شخصیت بھی متنازعہ ہو چکی ہے۔نیب گزشتہ دو سالوں سے مسلم لیگ ن کے رہنمائوں کیخلاف بغض اور عداوت پر مبنی کاروائیاں کررہا ہے۔

(جاری ہے)

نیب میاں نواز شریف،شہباز شریف ،مریم نواز ،راجہ قمر السلام،حافظ نعمان کیخلاف ایک بھی ثبوت عدالت میں پیش نہیں کر سکا۔

نیب اپنے قوانین کی کھلی خلاف ورزی کررہا ہے۔لہذا یہ ایوان نیب کی جانب سے خواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق کی انتقامی گرفتاری کی شدید مذمت کرتا ہے ۔نیب ایک مخصوص جماعت کیخلاف کاروائی کررہا ہے ۔مسلم لیگ ن ایسے بزدلانہ ہتھکنڈوں کا ڈٹ کر مقابلہ کرے گی ۔ہمارے صبر کا مسلسل امتحان لیا جا رہا ہے۔چیف جسٹس آف پاکستان یکترفہ احتساب کا نوٹس لیں اور چیئر مین نیب سے اس کی وضاحت طلب کریں۔