سابق کپتان شاہد آفریدی نے بابر اعظم کو کپتانے بنائے جانے کے فیصلے کی مخالفت کر دی

ورلڈ کپ 2020 کو مدنظر رکھتے ہوئے اگر شعیب ملک کو کپتان بنایا جاتا تو وہ زیادہ بہتر فیصلہ ہوتا کیونکہ شعیب ملک تجربہ کار کھلاڑی ہیں اور دنیا بھر میں ٹی ٹوئنٹی لیگز کھیل چکے ہیں: بوم بوم آفریدی

muhammad ali محمد علی جمعہ اکتوبر 22:31

سابق کپتان شاہد آفریدی نے بابر اعظم کو کپتانے بنائے جانے کے فیصلے کی ..
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 اکتوبر2019ء) سابق کپتان شاہد آفریدی نے بابر اعظم کو کپتانے بنائے جانے کے فیصلے کی مخالفت کر دی، ورلڈ کپ 2020 کو مدنظر رکھتے ہوئے اگر شعیب ملک کو کپتان بنایا جاتا تو وہ زیادہ بہتر فیصلہ ہوتا کیونکہ شعیب ملک تجربہ کار کھلاڑی ہیں اور دنیا بھر میں ٹی ٹوئنٹی لیگز کھیل چکے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان شاہد آفریدی نے سرفراز احمد کی برطرفی کے فیصلے پر ردعمل دیتے ہوئے اسے خوش آئندہ قرار دیا ہے۔

شاہد آفریدی ٹیسٹ ٹیم کے کپتان اظہر علی کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کیا ہے، جبکہ ٹی ٹوئنٹی ٹیم کیلئے بابر اعظم کو کپتان بنانے کے فیصلے کی مخالفت کی ہے۔ شاہد آفریدی کہتے ہیں کہ ورلڈ کپ 2020 کو مدنظر رکھتے ہوئے اگر شعیب ملک کو کپتان بنایا جاتا تو وہ زیادہ بہتر فیصلہ ہوتا کیونکہ شعیب کا تجربہ کافی زیادہ ہے۔

(جاری ہے)

بابر اعظم مستقل مزاجی سے کارکردگی دکھارہے ہیں اور وہ ٹیم میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں تاہم اس وقت وہ کپتانی کیلئے تیار نہیں ہیں واضح رہے کہ مایہ ناز کرکٹراظہر علی کو ٹیسٹ چمپئن شپ کے سیزن 20-2019 کے لیے قومی ٹیسٹ کرکٹ ٹیم جبکہ بابراعظم کو آسٹریلیا میں ہونے والے ٹی ٹونٹی ورلڈکپ 2020 تک قومی ٹی ٹونٹی کرکٹ ٹیم کا کپتان مقرر کیا گیا ہے۔

سرفراز احمد کو دونوں فارمیٹ میں ناقص کارکردگی کی بنیاد پر کپتانی سے ہٹایا گیا۔عالمی رینکنگ میں ساتویں نمبر پر موجود پاکستان ٹیم پانچویں رینک پر براجمان آسٹریلیا کے خلاف 2 ٹیسٹ میچ کھیلے گی۔ جہاں پہلا میچ 21 نومبر سے برسبین اور 29 نومبر سے ایڈیلیڈ میں کھیلا جائے گا۔پاکستان اور آسٹریلیا کے درمیان 3ٹی ٹونٹی میچز پر مشتمل سیریز کا آغاز 3 نومبر سے ہوگا۔

قومی ٹیم کو آئندہ سال فروری میں بنگلہ دیش کے خلاف ٹی ٹونٹی سیریز میں بھی شرکت کرنا ہے۔2010 میں لارڈز کے میدان میں ڈیبیو کرنے والے اظہر علی قومی ٹیسٹ کرکٹ ٹیم کی بیٹنگ لائن اپ میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں۔ قائداعظم ٹرافی کے پہلے مرحلے میں اظہر علی 388 رنز بنا کر دوسرے بہترین بیٹسمین رہے ہیں۔ اظہر علی نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کرکٹ کے اہم ترین فارمیٹ میں پاکستان کی قیادت کرنا کسی اعزاز سے کم نہیں۔

انہوں نے کہا کہ میں ورلڈٹیسٹ چمپئن شپ میں بہترین کارکردگی دکھانے کی کوشش کروں گا۔ اظہر علی نے کہا کہ سرفراز احمد نے بہترین انداز میں را ٹیلنٹ کوتجربہ کار کھلاڑیوں میں تبدیل کیا ہے۔ انہوں نے کہا وہ ان تجربہ کار کھلاڑیوں سے ورلڈ ٹیسٹ چمپئن شپ میں بہترین نتائج حاصل کرنے کی کوشش کریں گے۔قومی ٹیسٹ کرکٹ ٹیم کے کپتان اظہر علی نے کہاکہ وہ پی سی بی کی نئی مینجمنٹ کی موجودگی میں قومی ٹیسٹ کرکٹ ٹیم کی کارکردگی میں بہتری کے لیے بھرپور محنت کریں گے۔

ٹی ٹونٹی کی عالمی رینکنگ میں نمبر ون بیٹسمین بابراعظم اس سے قبل آئی سی سی انڈر 19 کرکٹ ورلڈکپ 2012 میں پاکستان کی قیادت کرچکے ہیں۔ بابراعظم سری لنکا کے خلاف ایک روزہ سیریز میں نائب کپتانی کرچکے ہیں۔ وہ ان دنوں نیشنل ٹی ٹونٹی کپ میں سنٹرل پنجاب کی قیادت کررہے ہیں۔بابراعظم کے مطابق عالمی رینکنگ میں نمبر ون ٹیم کی قیادت کرنا میرے کیریئر کا سب سے اہم لمحہ ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ میں نئی ذمہ داری سنبھالنے کے لیے مکمل طور پر تیار ہوں۔بابراعظم نے کہا کہ سرفراز احمد نے کرکٹ کے سب سے محدود فارمیٹ میں بہترین انداز میں ٹیم کی قیادت کی۔ انہوں نے کہا کہ وہ سرفراز احمد کی کامیابیوں کو آگے بڑھا کر ٹی ٹونٹی کرکٹ میں مزید کامیابیاں حاصل کرنے کی کوشش کریں گے۔سرفراز احمد نے کہاکہ پاکستان کی قیادت کرنا اعزاز کی بات تھی۔ انہوں نے کہا کہ وہ اس سفر میں ساتھ دینے پر اپنے تمام کوچز، ساتھی کھلاڑیوں اور سلیکٹرز کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔سرفرا زاحمد نے کہا کہ وہ اظہر علی اوربابراعظم کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہیں۔