Live Updates

چین، ویڈیو گیم کھیلتے ہوئے بچے چھت سے کود گئے

جمعہ مئی 23:01

بیجنگ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 22 مئی2020ء) چین میں دو بچے ویڈیو گیم کھیلتے ہوئے اٴْن ہی کے کرداروں کی طرح چھت سے کود گئے، اٴْن کو ایسا لگا کہ ویڈیو گیم کے کرداروں کی طرح وہ بھی گرنے کے بعد دوبارہ زندہ ہوجائیں گے جس کے بعد والدین نے ویڈیو گیم کمپنی پر مقدمہ کردیا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق چین کے دارالحکومت بیجنگ میں 9 اور 11 سالہ دو بہن بھائی ویڈیو گیم کھیلتے ہوئے اپنی بلڈنگ کی چھت سے نیچے کود گئے، جس کے بعد دونوں بچے شدید زخمی ہوگئے۔

ملکی میڈیاکے مطابق گیم کے دوران چھوٹی بہن نے بھائی سے کہا کہ اگر ہم چھلانگ لگائیں تو ہم بھی گیم کی طرح دوبارہ زندہ ہوجائیں گی اس کے بعد دونوں نے ا?نکھیں بند کرکے ایک ساتھ چھت سے چھلانگ لگادی، جس کے بعد وہ دونوں شدید زخمی ہوکر بے ہوش ہوگئے۔

(جاری ہے)

والدین کا کہنا ہے کہ اس گیم میں اوتار جیسے کردار عمارتوں سے گرتے ہیں اور دوبارہ زندہ ہوجاتے ہیں۔

دونوں بچے لاک ڈاو?ن کی وجہ سے روزانہ 8 گھنٹوں تک یہ گیم کھیلتے رہے، جس کا اٴْن پر اتنا اثر ہوا کہ انہوں نے گیم کے کرداروں کو حقیقی سمجھ لیا اور 50 فٹ کی بلندی سے کود گئے۔والدین نے مزید کہا کہ ان کے بچے نارمل تھے اور وہ گیم کے عادی ہوکر اس خطرناک اور جان لیوا تجربے پر مجبور ہوئے۔بچوں کے والدین نے چینی گیم کمپنی پر مقدمہ کردیا جبکہ کمپنی نے واقعے کی ذمے داری لینے سے انکار کردیا۔اس حادثے کے بعد بچوں کو یہ احساس ہوگیاہے کہ حقیقی دنیا ویڈیو گیم کی دنیا سے قدرے مختلف ہے۔
چین کی کرونا کو شکست سے متعلق تازہ ترین معلومات

متعلقہ عنوان :