نیشنل بینک کے منافع میں چھ ماہ کے دوران 36.8 فیصد اضافہ ہوا

پیر ستمبر 10:25

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 07 ستمبر2020ء) رواں مالی سال 2020ء کی پہلی ششماہی کے دوران نیشنل بینک آف پاکستان (این بی پی) کے منافع میں 36.8 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ این بی پی کے مالیاتی نتائج کے مطابق جنوری تا جون 2020ء میں بینک کو 15.2 ارب روپے کی آمدنی ہوئی ہے جو بینکنگ انڈسٹری میں سب سے زیادہ آمدن ہے۔ جنوری تا جون 2019ء کے مقابلہ میں نیشنل بینک آف پاکستان نے رواں سال کے اسی عرصہ کے مقابلہ میں 36.8 فیصد یعنی 4.1 ارب روپے زیادہ منافع حاصل کیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق بینک کے خالص اثاثہ جات 26.4 ارب کی کمی سے 259 ارب روپے تک بڑھ گئے جبکہ دسمبر 2019ء کے اختتام پر خالص اثاثوں کی مالیت 232.6 ارب روپے ریکارڈ کی گئی تھی۔ جنوری تا جون 2020ء کے دوران نیشنل بینک آف پاکستان گراس مارک اپ/ انٹریسٹ انکم کی مد میں 145.3 ارب روپے کمائے ہیں جو جنوری تا جون 2019ء کے مقابلہ میں 49 فیصد زائد رہی ہے۔

(جاری ہے)

اس دوران این بی پی نے 977 ارب روپے کمائے تھے۔

سال رواں کی پہلی ششماہی کے دوران بینک کے اثاثہ جات مجموعی طورپر 2428.1 ارب روپے تک بڑ ھ گئے ہیں جبکہ سال 2019ء کے اسی عرصہ کے دوران اثاثوں کی مالیت 1931.5 ارب روپے تھی ۔ جنوری تا جون 2020ء کے دوران بینک کی سرمایہ کاری 1403.7 ارب روپے رہی ہے اور انٹرنیٹ مارک اپ کی مدمیں 85.4 ارب روپے آمدنی ہوئی ہے جو سال 2019ء کے اسی عرصہ کے مقابلہ میں 92.2 فیصد زیادہ رہی ہے۔ اسی طرح این بی پی کی جانب سے قرضوں کی فراہمی میں 6.6 فیصد اضافہ ہوا ہے اور جون 2019ء کے اختتام پر قرضوں کا حجم 911.3 ارب روپے تک جو رواں سال کی پہلی ششماہی میں 971.1 ارب روپے تک بڑھ گیا اور اس پر بینک کو 57.6 ارب روپے آمدنی ہوئی ہے جو گزشتہ سا ل کی پہلی ششماہی کے مقابلہ میں 18.7 فیصد زیادہ رہی ہے۔

متعلقہ عنوان :