بیرون ممالک مقیم پاکستانیوں کی جانب سے ترسیلات زرمیں اضافہ کی وجہ سے جاری مالی سال کے پہلے دوماہ میں حسابات جاریہ کے کھاتوں کاتوازن 805 ملین ڈالر فاضل

بدھ ستمبر 12:41

بیرون ممالک مقیم پاکستانیوں کی جانب سے ترسیلات زرمیں اضافہ کی وجہ سے ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 23 ستمبر2020ء) درآمدات میں کمی اوربیرون ممالک مقیم پاکستانیوں کی جانب سے ترسیلات زرمیں اضافہ کی وجہ سے جاری مالی سال کے پہلے دوماہ میں حسابات جاریہ کے کھاتوں کاتوازن 805 ملین ڈالر فاضل رہاہے۔

(جاری ہے)

سٹیٹ بینک آف پاکستان کے ترجمان نے بدھ کوبتایا کہ جاری مالی سال کے پہلے دوماہ میں حسابات جاریہ کے کھاتوں کا توازن اگست میں مسلسل دوسری مرتبہ فاصل رہاہے، جولائی اوراگست 2020ء میں حسابات جاریہ کے کھاتوں کا توازن بالترتیب 508 اور297 ملین ڈالر فاضل رہاہے۔

گزشتہ مالی سال کے پہلے دوماہ میں حسابات جاریہ کے کھاتوں میں 1.2 ارب ڈالرکے خسارے کاسامناکرنا پڑاتھا۔ترجمان نے کہاکہ بیرون ممالک مقیم پاکستانیوں کو قانونی زرائع سے ترسیلات زربجھوانے کیلئے مراعات وترغیبات، لچکدارایکسچینج ریٹ اوردرآمدات پرانحصارمیں بتدریج کمی کی وجہ سے حسابات جاریہ کے کھاتوں میں توازن ممکن ہواہے۔

متعلقہ عنوان :