Live Updates

سعودی عرب کا اہم فیصلہ، پہلی بار خواتین بغیر محرم کے حج کر سکیں گی

حج کے لیے منتخب افراد کو تین گھنٹوں کے اندر حج پیکیج کی فیس جمع کروانی ہو گی، ورنہ ان کا نام فہرست سے نکال دیا جائے گا

Muhammad Irfan محمد عرفان پیر 14 جون 2021 15:12

سعودی عرب کا اہم فیصلہ، پہلی بار خواتین بغیر محرم کے حج کر سکیں گی
ریاض(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔14 جون2021ء) سعودی حکومت کی جانب سے کورونا وبا کے پیش نظر اس بار حج مملکت میں مقیم غیر ملکیوں اور مقامی افراد تک ہی محدود کر دیا گیا ہے۔ سعودیہ سے باہر مقیم افراد اس بار حج کی سعادت سے محروم ہی رہیں گے۔ سعودی وزارت حج کی جانب سے حج درخواستوں کی وصولی آن لائن پلیٹ فارم سے شروع کر دی گئی ہے۔سعودی عرب کے نائب وزیر حج و عمرہ ڈاکٹر عبدالفتاح مشاط نے بتایا ہے کہ سعودی عرب میں پہلی بار حج کی خواہش رکھنے والی خواتین کو بڑی رعایت دے دی گئی ہے۔

جو خواتین حج کا ارادہ رکھتی ہیں وہ محرم کے بغیر بھی حج کے لیے آن لائن رجسٹریشن کروا سکتی ہیں۔ ماضی میں حج کے لیے محرم کے ساتھ ہونے کی شرط ختم کر دی گئی ہے جس سے خواتین کو بڑی سہولت حاصل ہو گی۔

(جاری ہے)

ڈاکٹر عبدالفتاح نے مزید بتایا کہ مشاعر مقدسہ میں حاجیوں کے لیے لگائے خیموں میں بھی سماجی فاصلے کو ممکن بنایا جائے گا۔ ایک خیمے میں صرف 4 عازمین کو قیام کی اجازت ہو گی۔

جبکہ حج کے تمام مناسک کے دوران دو عازمین کے درمیان کم از کم ڈھائی میٹر کے سماجی فاصلے کی پابندی کو ممکن بنایا جائے گا۔ جو خواتین بغیر محرم کے حج کے لیے درخواست دیں گی، انہیں منظوری ملنے کے بعد خواتین عازمین کے گروپ میں شامل کیا جائے گا۔ مشاعر مقدسہ میں کسی عازمِ حج کا کورونا ٹیسٹ مثبت آنے کی صورت میں اس کے لیے قرنطینہ کا خصوصی انتظام کیا گیا ہے۔

ڈاکٹر عبدالفتاح نے حج کی خواہش رکھنے والوں کا آگاہ کیا کہ اگر ان کی درخواست حج کے لیے منظور ہو جاتی ہے تو ایسی صورت میں انہیں 3 گھنٹے کے اندر منتخب کردہ حج پیکیج کی فیس ادا کرنی ہو گی، ورنہ ان کا نام حج کے لیے منتخب افراد کی فہرست سے نکال دیا جائے گا۔واضح رہے کہ جو لوگ اس بار حج کے خواہش مند ہیں وہ اپنی درخواستیں وزارت حج و عمرہ کی ویب سائٹ پر 23 جون کی رات 12 بجے تک جمع کروا سکتے ہیں۔ اس کے بعد کوئی درخواست وصول نہیں کی جائے گی۔ وزارت حج کے مطابق اس بار کورونا پوروٹوکولز کی وجہ سے حج پیکیج ماضی کے مقابلے میں مہنگے ہوں گے۔ 
Live پاکستان میں کرونا وائرس کی چوتھی لہر سے متعلق تازہ ترین معلومات