پشاور کے واحد چڑیا گھر میں 30سے زائد مختلف اقسام کے جانوروں کی ہلاکت کا انکشاف،نیل گائے سمیت مختلف پرندے سانس کی بیماریوں کے باعث مرے ، جانوروں کیلئے چڑیاگھر میں کوئی لیب نہیں ،انکوائری رپورٹ

ہفتہ مئی 21:26

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ ہفتہ مئی ء)پشاور شہرکے واحد چڑیا گھر میںجانوروں کی ہلاکتوں سے متعلق انکوائری رپورٹ صوبائی حکومت کو ارسال کو ارسال کردی گئی جس میں 30سے زائد مختلف اقسام کے جانوروں کی ہلاکت کا بھی انکشاف ہوا ہے،صوبائی حکومت کی جانب سے پشاور شہرکے واحد اوراولین چڑیا گھر میں جانوروں کی ہونیوالی اموات پر سخت ایکشن لیتے ہوئے اس کے تحقیقات کیلئے انکوائری کمیٹی مقررکردی تھی،چڑیاگھر میںجانوروںکے ہلاکت سے متعلق بنائی کمیٹی کے اراکین تحقیقات کرتے ہوئے اپنی رپورٹ چیف سیکرٹری کو رپورٹ ارسال کردی گئی ہیں جس میں بتایاگیا ہے کہ پرندے اور نیل گائے سانس کی بیماریوں کے باعث مرے ہیںجبکہ چڑیاگھر میں معمول کی بیماریوں کے لئے لیب نہیں ہے چڑیا گھر میں سیر کیلئے آنیوالے افراد بھی اس صورتحال کوافسوسناک قرار دیتے ہیں۔

(جاری ہے)

انکوائری رپورٹ میں پراجیکٹ ڈائریکٹر کا دفتر چڑیاگھر میں قائم کرنے کا کہا ہے انکوائری کمیٹی کے ممبر ممتاز ملک کے مطابق پشاور میں قائم چڑیاگھر میں جانوروں کے پنجروں میں گھاس اگانے کی سفارش سمیت ڈاکٹروں کی بہتر تربیت کیلئے انہیں چڑیا گھر میں بھیجنے کی ہدایت کی گئی ہیں،تاہم اس حوالے سے پراجیکٹ ڈائریکٹر نے بات کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ انکوائری رپورٹ پر سیکرٹری ہی بات کرسکیں گے،رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ جانوروں کے ڈاکٹر اور متعلقہ عملے کی صحیح تربیت نہیں کی گئی جبکہ شہریوں میں آگاہی پیدا کرنے کیلئے بھی زور دیا گیا ہے۔

متعلقہ عنوان :

Your Thoughts and Comments