صوبائی وزیر لیبر عنصر مجید خان نے فیصل آباد کے 235 خاندانوں میں ویلفیئر گرانٹس کے چیک تقسیم کئے

بدھ 20 اکتوبر 2021 18:39

لاہور۔20اکتوبر  (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی - اے پی پی۔ 20 اکتوبر2021ء) :ضلع فیصل آباد کے مزدوروں اور انکے اہل خانہ کو ایک کروڑ 88 لاکھ روپے سے زائد مالیت کے ویلفیئر گرانٹس کی ادائیگی کردی گئی ہے۔میٹروپولیٹن کارپوریشن ہال میں منعقدہ تقریب میں صوبائی وزیر لیبر عنصر مجید خان نے235 خاندانوں میں ویلفیئر گرانٹس کے چیکس تقسیم کئے گئے جن میں ڈیتھ گرانٹ کی ادائیگی کیلئے 46 لاکھ روپے جبکہ ٹیلنٹ سکالرشپ کی مد میں ایک کروڑ 42 لاکھ روپے مالیت کے چیکس تقسیم کئے گئے۔

صوبائی وزیر لیبر نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے بتایا کہ گزشتہ تین سال کے دوران مزدوروں میں ساڑھے سات ارب روپے کی ویلفیئر گرانٹس تقسیم کیں ہیں۔ فیصل آباد میں تین سالوں میں 5 کروڑ 58 لاکھ روپے کی ویلفیئر گرانٹ مزدوروں میں تقسیم کی جاچکی ہیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ بطور صوبائی وزیر  وہ مزدوروں کو جوابدے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ مسائل کے حل کیلئے محکمہ لیبر کو مکمل طور پر کمپیوٹرائزڈ کیا جارہا ہے اورایسا سسٹم بنا یا جارہا ہے جو لوگوں کیلئے آسانیاں پیدا کرے۔

انہوں نے بتایا کہ گھریلو ملازمین کے حقوق کے تحفظ کیلئے قانون سازی کی  گئی  اورورکرز ویلفیئر فنڈ کو وفاق سے پنجاب منتقل کرایا گیا ہے۔محکمہ لیبر مزدوروں کے خون پسینے کے پیسے کا امین ہے مگرسابقہ حکومتوں نے مزدوروں کا استحصال کیا۔مزدور کارڈ پروگرام لیبر ڈیپارٹمنٹ کی جانب سے انتہائی اہم اقدام ہے۔ اس انقلابی پروگرام کے تحت بینک آف پنجاب 11 لاکھ مزدوروں کو مزدور کارڈ بنا کر دیگا اورتمام رجسٹرڈ مزدوروں کے بینک اکاونٹ کھلیں گے جس کے ذریعے تنخواہ کی ادائیگی سے کم از کم اجرت کے قانون پر سو فیصد عمل درآمد ہوگا۔

صوبائی وزیر نے کہا کہ 3 سالوں میں 3 لاکھ مزدور رجسٹرڈ کئے گئے اور اتنے ہی مزدوروں کو سوشل سکیورٹی کارڈ جاری کئے گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ جن بھٹوں پرباالخصوص خواتین مزدوروں کیلئے واش روم اور صاف پانی کا انتظام نہیں ہوگا انہیں سیل کر دیا جائے گا۔محکمہ صنعتی علاقوں میں وویمن لیبر ہاسٹل بنائے گاجبکہ خواتین کیلئے موٹر سائیکل سکیم پر کام شروع کر دیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ورکرز پرافٹ پارٹی سیپیشن فنڈ ایکٹ صوبہ میں نافذ ہو گیا ہے،بل کی منظوری کے بعد انڈسٹری سے تقریبا 25 ارب روپیہ محکمہ کو موصول ہوگا جومزدوروں کی فلاح و بہبود پر خرچ کیا جائے گا۔صوبائی وزیر لیبر نے فیصل آباد میں محکمہ لیبر کا زونل آفس قائم کرنے کا اعلان بھی کیا۔ صوبائی وزیر کالونیز وکلچر نے کہا کہ فیصل آباد کی بند صنعتیں دوبارہ چلنی شروع ہوئیں ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ کورونا وبا کے دوران صنعتیں رواں دواں رہیں، فیصل آباد میں مزدور کم ہیں اور روزگار کے مواقع زیادہ ہیں۔انہوں نے بتایا کہ فروری 2022 تک ہر شخص کا شناختی کارڈ ہی ہیلتھ کارڈ ہو گا۔طالب علموں کو میٹرک کے بعددس سال کیلئے بلا سود قرضے دیں گے جسے وہ ڈگری مکمل کرنے کے بعد ادا کریں گے۔صوبائی وزیر کالونیز نے بتایا کہ 62 سال سے زیادہ عمر کی خاتون مزدور کو 2500اور مرد کو 2000روپے کی ماہانہ گرانٹ دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

سیکرٹری لیبر لیاقت علی چٹھہ نے بتایا کہ افسران کو 90 دن میں ویلفیئر گرانٹس کے 35 ہزار زیر التوا درخواستوں کو نمٹانے کا ہدف دیا گیاہے۔انہوں نے بتایا کہ آئندہ تین ماہ میں مزدوروں اور انکے اہل خانہ کو 8 ارب روپے کی ادائیگی کی جائے گی۔انہوں نے بتایا کہ تمام سسٹم کو کمپیوٹر آئزڈ کر رہے ہیں، ویلفیئر گرانٹس کی درخواست کیلئے آن لائن کیس جمع ہوگا۔

آن لائن درخواست جمع کروانے کیلئے محکمہ لیبر کے آفسز میں بھی سہولت موجود ہے۔انہوں نے بتایا کہ لیبرکالونیوں میں ہائر سیکنڈری سکول،500 کمروں کا ہاسٹل اور کمیونٹی سنٹر بھی بنا رہے ہیں۔تقریب سے مزدور رہنما رانا عبدالسمیع،راجہ شبیر،ملک امداد اعوان سمیت دیگرنے بھی خطاب کیا۔ڈائریکٹر لیبر ملک منور اعوان اور افسران کے علاوہ مزدور رہنما اور ورکرز بھی موجود تھے۔

لاہور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments