سکھر میں بلدیہ ملازمین نے دفاتر کی تالہ بندی کردی، کام چھوڑ ہڑتال ،احتجاجی مظاہرہ و نعرے بازی

جمعرات اکتوبر 20:00

سکھر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 10 اکتوبر2019ء) سکھر میں بلدیہ ملازمین نے دفاتر کی تالہ بندی کردی، کام چھوڑ ہڑتال ،احتجاجی مظاہرہ و نعرے بازی، تین دن میں مطالبات منظور نہ کیے جانے کی صورت میں راست اقدام اٹھانے کی دھمکی دے دی، تفصیلات کے مطابق سکھر میونسپل کارپوریشن کے ملازمین نے مطالبات تسلیم نہ کیے جانے کے خلاف آج احتجاجاً میونسپل کمشنر سمیت بلدیہ کے دیگر دفاتر کی تالہ بندی کردی اور کام چھوڑ ہڑتال کرکے بلدیہ کے احاطے میں محنت کش اسٹاف یونین کے رہنماؤں علی مردان شیخ ،سعید مہر،سید مسلم شاہ،دانش قریشی ودیگر کی قیادت میں احتجاجی مظاہرہ کیا اور نعرے بازی کی اس موقع پر رہنماؤں کا کہنا تھا کہ گذشتہ کئی ماہ سے ریٹائرڈ ملازمین کو پنشن نہیں دی جارہی ہے اسٹاف کو وردیاں اور دیگر سہولیات سے محروم رکھا جارہا ہے گذشتہ کئی سالوں سے ملازمین ایک ہی گریڈ میں کام کررہے ہیں ان کی اپ گریڈیشن نہیں کی جارہی ہے اس کے علاوہ بھی دیگر مسائل ہیں لیکن بلدیہ انتظامیہ ہے کہ اس کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگ رہی ہے ہمارے مطالبات جائز ہیں اور یہ ملازمین کاحق ہے جو انہیں نہیں دیا جارہا ہے جس کی وجہ سے ہم احتجاج پر مجبور ہوئے ہیں اور اگر تین دن میں ہمارے مطالبات پورے نہیں کیے گئے تو ہم راست اقدام اٹھانے پر مجبور ہونگے اور حالات کی ذمہ داری میونسپل انتظامیہ پر عائد ہوگی۔

متعلقہ عنوان :

سکھر شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments