اللہ تعالیٰ نے موت اورحیات کوپیدافرمایا ‘دنیاکی کوئی طاقت موت کے قانون کونہیں ٹال سکی اورہراک ذی روح نے موت کے قانون سے گزرناہے ‘س میں ذرابھرتبدیلی نہیں کی جاسکتی اوریہ جہان عارضی ہے اورانسان کے لیے امتحان گاہ ہے

عالمی مبلغ اسلام سجادہ نشین آستانہ عالیہ فیض پورشریف مولاناپیرمحمدحبیب الرحمن محبوبی کا تقریب سے خطاب

منگل اپریل 15:48

پرائی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 اپریل2018ء)عالمی مبلغ اسلام سجادہ نشین آستانہ عالیہ فیض پورشریف پیرطریقت رہبرشریعت حضرت علامہ مولاناپیرمحمدحبیب الرحمن محبوبی نے کہاہے کہ اللہ تعالیٰ نے موت اورحیات کوپیدافرمایا اوردنیاکی کوئی طاقت موت کے قانون کونہیں ٹال سکی اورہراک ذی روح نے موت کے قانون سے گزرناہے اوراس میں ذرابھرتبدیلی نہیں کی جاسکتی اوریہ جہان عارضی ہے اورانسان کے لیے امتحان گاہ ہے جس نے جوکچھ کیاہوگاوہ درج ہورہاہے اورہمارے ساتھ بیٹھے دوفرشتے اسے ہرروزبارگاہ الٰہی میں جمع کرارہے ہیں جس نے نیک اعمال کیے وہ اورجس نے بداعمال کیے وہ بھی جمع ہورہے ہیں مگراس عارضی زندگی کے بعددائمی زندگی آنے والی ہے جہاں پرہم نے ہمیشہ رہناہے اس دنیاسے جانے کے بعدایک بارپھرہمیں زندہ کیاجائے گا جہاں پرہماراحساب وکتاب ہوناہے۔

(جاری ہے)

ان خیالات کااظہارانہوںنے مسکین پورہ پرائی میں سابق چیئرمین چودھری خالدحسین مرحوم کی روح کے ایصالِ ثواب کے سلسلہ میں منعقدہ روحانی ونورانی محفل سے بحیثیت مہمانِ خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوںنے کہاکہ جب انسان دنیاسے چلاجاتاہے اُس کے اعمال کاسلسلہ بندہوجاتاہے پھراُس نے جوصدقہ جاریہ کے کام کروائے کسی نے مسجدبنوائی،کنواں کھدوایا،راستہ بنادیا اپنے پیچھے نیک اولادچھوڑی اوروہ نیک اولاداُس کے پیچھے ایصالِ ثواب کی محفلیں منعقد کرتی ہے اورجوصدقہ جاریہ کے کام کرائے جب تک وہ قائم ہیںاورلوگ اُن سے استفادہ کرتے رہیں گے اُس میت کواس کاثواب ملتارہے گا اورجس نے اپنی اولادکوصحیح راستے پرنہیں لگایا،اُسے علم کی روشنی سے بہرہ ورنہیں کیا اس کے علاوہ اُس نے سینماتعمیرکردیااوراُس کی اولادبداعمالیوں کاشکاررہی تواُسے اس کے عوض قبرمیں عذاب ملتارہے گا اوراللہ تعالیٰ کی بخشش ورحمت سے محروم رہے گا۔

انہوںنے کہاکہ اس عارضی اورفانی زندگی میں جوبھی عمل کیے نیک اعمال کیے یابداعمالیوں کاشکاررہا جوجوعمل کرے گا اُسے اُسی حساب سے نوازاجائے گا۔انہوںنے کہاکہ آج ہمارے پاس وقت ہے اپنی اولادوں کی صحیح تربیت کی جائے اورعلم کی روشنی سے روشناس کرایاجائے اور حضورؐ کی سنت وشریعت پرمکمل عمل کیاجائے اوردعاکی جائے کہ اللہ تعالیٰ ہماراخاتمہ ایمان پرفرمائے۔

اگرایک شخص اللہ کی بندگی میں مصروف رہا مگربدقسمتی سے اُس کاخاتمہ ایمان پرنہیں ہواتووہ کامیاب انسانہیں ہے بلکہ وہ ناکام ہوگیاہے۔اس موقع پرممبراسلامی نظریاتی کونسل حکومت آزادکشمیرسیدغلام یاسین گیلانی،حافظ محمدزاہد،الحاج عبدالرزاق،حافظ محمدرمضان،حافظ بیرسٹرمحمدافضل،سابق چیئرمین کے ڈی اے چودھری عبدالمجید کے علاوہ آستانہ عالیہ فیض پورشریف کے عقیدت مندوں ودیگرسنگیوں کی کثیرتعدادموجودتھی۔اختتامی دعاکے بعدحاضرین میں لنگرتقسیم کیاگیا۔