سرگودھا سنٹرل جیل میں تہرے قتل میں سزائے موت کے 2 مجرموں کی پھانسی 2 یوم کے لئے ٹل گئی

فریقین میں صلح کی آخری کوشش پر عدالت نے 19 اپریل کی ہونے والی پھانسی کو 21 اپریل تک موخر کر دیا

بدھ اپریل 13:32

سرگودھا سنٹرل جیل میں تہرے قتل میں سزائے موت کے 2 مجرموں کی پھانسی 2 ..
سرگودھا(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 اپریل2018ء) سرگودھا سنٹرل جیل میں تہرے قتل میں سزائے موت کے 2 مجرموں کی پھانسی 2 یوم کے لئے ٹل گئی جس پر اب ان کی ورثائ سے 20 اپریل کو آخری ملاقات کریں گے۔معلوم ہوا ہے کہ فریقین میں صلح کی آخری کوشش پر عدالت نے 19 اپریل کی ہونے والی پھانسی کو 21 اپریل تک موخر کر دیا۔زرائع کے مطابق تھانہ بھیرہ کے مقدمہ قتل میں سزائے موت کے مجرمان کیسو پور کے امجد علی اور خضرحیات نے 15 اپریل 2015 کو موضع کیسپور میں دیرینہ عداوت پر اپنے مخالف محمد اسلم کو مسجد میں قتل کرنے کے بعد مقتول کے گھر گھس کر اس کے بھائی محمدرمضان اور ان کی ہمشرہ کوثر پروین کو بھی موت کے گھاٹ اتار دیا اور ان کی بہن بشیراں بی بی کو مضروب کردیا تھا۔

(جاری ہے)

جس پر تھانہ بھیرہ میں تہرے قتل کے درج مقدمہ میں جرم ثابت ہونے پر انسداد دہشت گردی سرگودھا کے اس وقت جج نے مجرمان کو جرم ثابت ہوئے تین بار سزائے موت کا حکم سنایا جس میں ہائی کورٹ اور سپریم کورٹ سے اپیلیں اور پھر صدر مملکت کی رحم کی اپیل بھی خارج ہو گئی تو لاہور ہائی کورٹ کے حکم پر ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج سرگودھا امیر محمد خان نے مجرمان کے 19 اپریل کے لئے ڈیتھ وارنٹ جاری کئے تھے،لیکن گزشتہ روز صلع کی درخواست پر 2 روز کی مہلت دیتے ہوئے پھانسی 21 اپریل تک موخر کر دی جس پر اب20 اپریل کو مجرمان سے جیل میں ان کے ورثا کی آخری ملاقات کروائی جائے گی۔جس کے لئے انہیں اطلاع نامہ بجھوا دیا گیا ہے۔

متعلقہ عنوان :