صوبے میںکھیلوں کے ٹیلنٹ کی کمی نہیں، سہولیات نہ ہونے سے ٹیلنٹ ضائع ہو رہا ہے، حاجی نواب خان

بدھ اپریل 15:40

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 اپریل2018ء) رکن تحصیل کونسل ومانیار فٹ بال کلب سوات کے سیکرٹری جنرل حاجی نواب خان نے کہا ہے کہ خیبرپختونخوا صوبے میں کھیلوں کے ٹیلنٹ کی کمی نہیں بلکہ سہولیات نہ ہونے سے ٹیلنٹ ضائع ہو رہا ہے۔ گذشتہ روز اے پی پی سے گفتگو کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ کوئی بھی کھیل حکومت کی سرپرستی اور سپانسرشپ کے بغیر ترقی نہیں سکتا اور خیبرپختونخوا کی حکومت دوسرے کاموں کی طرح کھیلوں پر بھی توجہ دیکر دیہاتوں کی سطح پر کھیلوں کے میدان تعمیر کروائے اور دیہاتوں کی سطح پر کھیلوں کے میدان نہ ہونے سے صوبے میں کھیلوں کا نیا ٹیلنٹ ضائع ہو رہا ہے۔

حاجی نواب خان نے کہا کہ صوبائی حکومت پر زور دیتے ہو ئے کہا کہ صوبے میں ضلعی سطح کھیلوں کی فری سرکاری اکیڈمیانوں کا قیام عمل میں لایا جائے اور کھیلوں کے ذریعے ہی نوجوان نسل کو معاشرتی برائیوں سے بچایا جا سکتا ہے، اس وقت صوبے میں کھیلوں کے فروغ کی اشد ضرورت ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ کھیل کے ذریعے صحت مند معاشرے کے ساتھ قیام امن کو بھی فروغ دیا جاسکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ کھلاڑی امن کے سفیر ہوتے ہیں اور نوجوانوں کو چاہیئے کے وہ اپنی جسمانی نشوو نماء کو پران چڑھانے کیلئے اپنے ٹیلنٹ کو نکھارنے کے ساتھ ساتھ امن ، اتحاد اور بھائی چارگی کے فروغ کا ذریعہ بنیں۔ حاجی نواب نے کہا کہ نوجوان نسل ملکی تعمیر و ترقی میں کلیدی کردار ادا کر سکتے ہیں اور ہمیں چاہئے کہ انہیں مثبت سرگرمیوں کی جانب سے راغب کرکے ایک بہتر پلیٹ فارم مہیا کریں۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ مانیار فٹ بال کلب سوات میں ہر سال فٹ بال ٹورنامنٹ کا انعقاد کرتی ہے اور آئندہ بھی فٹ بال ٹورنامنٹ کا انعقاد کرے گی جس کا اعلان آئندہ چند دنوں میں کلب کے ایک اجلاس میں کیا جائے گا۔