چین، نیپال اور بھارت کو تعاون کے ذریعے مشترکہ ترقی اور خوشحالی کے حصول کے لئے مل کر کام کرنا چاہیئے، چینی وزیرِ خارجہ

جمعرات اپریل 12:27

بیجنگ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 اپریل2018ء) چین کے وزیر خارجہ وانگ یی نے اپنے نیپالی ہم منصب پرادیپ کمار گایاو لی سے بیجنگ میں مذاکرات کئے۔چائنہ ریڈیو انٹرنیشنل کے مطابق مذاکرات کے بعد دونوں رہنمائوں نے مشترکہ طور پر صحافیوں سے ملاقات کی۔صحافیوں کی جانب سے چین،، نیپال اور بھارت کے تعلقات کی ترقی کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں وانگ یی نے کہا کہ چین،، نیپال اور بھارت تینوں ممالک فطری دوست اور ساتھی ہیں۔

تینوں ممالک کو مشترکہ ترقیاتی ہدف پر قائم رہنا چاہیئے اور مشترکہ تعاون کے ذریعے مشترکہ ترقی اور خوشحالی کے حصول کے لئے کام کرنا چاہیئے۔انہوں نے کہا کہ چین اور بھارت دونوںکو یکساں طور پر نیپال کی ترقی کی حمایت کرنی چاہیئے۔انہوں نے کہا کہ چین اور بھارت تیز ترقی کی حامل نئی معیشتوں کی نمائندگی کرتی ہیں۔

(جاری ہے)

ہم نہ صرف اپنی ترقی کو فروغ دیتے ہیں بلکہ اس سے نیپال سمیت دیگر ممالک بھی فائدہ اٹھاسکیں گے۔

وانگ ای نے مزید کہا کہ چین اور نیپال نے دی بیلٹ اینڈ روڈ کی مشترکہ تعمیر کے حوالے سے اتفاق رائے کیا ہے۔مستقبل میں دونوں ممالک کے درمیان متعدد شعبوں میں تعاون چین۔۔نیپال اور بھارت کی ترقی کے لئے بھی فائدہ مند ہوگا۔انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں امید ہے کہ ہمالیہ کو عبور کرکے سہ جہتی روابط اور کنکشن کے نیٹ ورک کی تعمیر کی جائے گی۔ ہم بندرگاہ ،،ریلوے،، ہائی وے، ایوی ایشن، بجلی اور ٹیلی مواصلات سمیت دیگر شعبوں میں چین اور نیپال کے درمیان سہ جہتی راہداری کی تعمیر کرنا چاہتے ہیں۔مذکورہ راہداری کی تعمیر سے مستقبل میں تعمیر کی جانے والی چین نیپال بھارت اقتصادی راہداری کی تعمیر کے لئے سہولت فراہم ہو گی۔