سینئر سول جج تورغر کے حکم پر چار ماہ قبل قتل ہونے والے نوجوان کی قبر کشائی اور پوسٹ مارٹم

جمعرات اپریل 13:54

تورغر۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 اپریل2018ء) تورغر میں چار ماہ قبل قتل ہونے والے نوجوان کی قبر کشائی کر کے پوسٹ مارٹم کیا گیا۔ مقتول کی قتل کی دعویداری تاج مہرین ولد الف سید پر کی گئی تھی۔ تفصیلات کے مطابق چار ماہ قبل ضلع تورغر بمقام جدباء میں احمد حسین ولد بخت مرین کو قتل کیا گیا جسے بغیر پوسٹ مارٹم کے دفن بھی کر دیا گیا۔ گذشتہ روز سینئر سول جج تورغر کی موجودگی میں میڈیکل آفیسر اکبر ناز، ٹی ایم سٹاف، ایس ایچ او تھانہ جدباء، او آئی آئی محمد تاجون اور دیگر پولیس نفری بلکوٹ کے مقام پر مقتول کے والد تاج مرین اور معززین علاقہ کی موجودگی میں قبر کشائی کی گئی۔

پورسٹ مارٹم کارروائی مکمل ہونے کے بعد مقتول کے قتل کی دعویداری تاج مہرین ولد الف سید قوم نصرت خیل ساکنہ بلکوٹ پر کی گئی جو پہلے سے گرفتار اور سب جیل مانسہرہ میں بند ہے۔

(جاری ہے)

یاد رہے کہ چار ماہ قبل جب مقتول کو قتل کیا تھا تو اس وقت ورثاء نے پوسٹ مارٹم سے انکار کر دیا تھا لیکن بعد میں مدعی کی درخواست پر گذشتہ روز نعش کو نکال کر پورسٹ مارٹم کیا گیا جس پر علاقہ بھر کے عوام نے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے ڈی پی او سردار خان اور ایس پی انوسٹی گیشن زین خان کی کارکردگی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ضلع تورغر پولیس نے ہمیں انصاف فراہم کیا اور ہماری داردرسی کی گئی جس پر ہم ضلع تورغر پولیس کو مبارکبار پیش کرتے ہیں۔

متعلقہ عنوان :