سرگودھاریجنل اینٹی کرپشن پولیس نے اسسٹنٹ کمشنر دریا خان ساجدصفدرکو سرکاری خزانے کو نقصان پہچانے کے جرم میں گرفتار کر لیا

جمعرات اپریل 16:10

سرگودھا(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 اپریل2018ء) سرگودھاریجنل اینٹی کرپشن پولیس نے اسسٹنٹ کمشنر دریا خان ساجد صفدر کو سرکاری خزانے کو ایک کروڑ اکتالیس لاکھ روپے کا نقصان پہچانے کے جرم میں گرفتار کر لیا۔ذرائع کے مطابق سال 2015میں آدم جی شوگرملز کو فیکٹو گروپ کو فروخت کیا گیا۔ موجودہ اسسٹنٹ کمشنر دریا خان ساجد صفدر اس وقت سب رجسٹرار دریا خان تعینات تھے جنہوں نے انتقلات کے دوران شوگر مل کی ویلیو کو کم ظاہرکیا اور انتقلات کی فیسوں میں خزانہ سرکار کو ایک کروڑ اکتالیس لاکھ روپے کا نقصان پہنچایا۔

جس پر اینٹی کرپشن ریجن سرگودھا میں انکوائری کے بعد ساجد صفدر کے خلاف مقدمہ نمبر7/2018سرگودھا ریجن بجرم 409,471,466,409ت پ درج کر لیاگیا۔ ریجنل ڈائریکٹراینٹی کرپشن سرگودھا نے مقدمے کی تفتیش کے لیے 4رکنی تفتیشی ٹیم تشکیل دی جس میں ڈپٹی ڈائریکٹر (تفتیش) عروج الحسن، ڈپٹی ڈائریکٹر (لیگل) گل محمد راں، اسسٹنٹ ڈائریکٹر (تفتیش) محمد خرم انوار اور سرکل آفیسر ہیڈ کوارٹر عصمت اللہ بندیال تھے۔

(جاری ہے)

دوران تفتیش یہ جرم ثابت ہو گیا کہ موجودہ اسسٹنٹ کمشنر دریا خان ساجد صفدر نی2015میں بطور سب رجسٹرار کام کرتے ہوئے فیکٹو شوگر مل کو دوران انتقال ایک کروڑ اکتالیس لاکھ روپے کا فائدہ پہنچایا۔ دوران تفتیش یہ بات بھی سامنے آئی کہ ساجد صفدر نے فیکٹوگروپ کو فائدہ پہچانے کے لیے جعلی فردات کابھی استعمال کیا۔جس پراینٹی کرپشن سرگودھا کی ٹیم نے چھاپہ مار کر اسسٹنٹ کمشنر ساجد صفدر کو دریا خان سے گرفتار کر لیا گیا۔ مقدمے میں ملوث باقی افراد کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں۔

متعلقہ عنوان :