بہاول پور صوبہ کی تحریک میں تیزی، مردوں کے ساتھ خواتین بھی میدان میں آگئیں

تحریک صوبہ بہاولپورکی خواتین ونگ کا پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ،مطالبے کے حق میں نعرے بازی

جمعرات اپریل 20:11

بہاول پور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 اپریل2018ء) بہاول پور صوبہ کی تحریک میں تیزی، مردوں کا ساتھ دینے کے لیے خواتین بھی میدان میں آگئی تحریک صوبہ بہاولپورکی خواتین ونگ کا پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ، احتجاج میں سینکڑوں کی تعداد میں خواتین شریک، خواتین کے شرم کرو حیا کرو ہمارا صوبہ بحال کرو کے نعرے۔

(جاری ہے)

خواتین کے احتجاجی کیمپ میں جماعت اسلامی کے پارلیمانی لیڈر پنجاب اسمبلی ڈاکٹر سید وسیم اختر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جوں جوں دن گزرتے جائیں گے تحریک زور پکڑتی جائے گی صوبہ بحالی کے لیے ہر حد پار کریں گیاس لیے حکمران عقل کے ناخن لیں اور صوبہ بہاول پور کی بحالی کا اعلان کرئے ورنہ آنے والے الیکشن میں ن لیگ کی مشکلات میں اضافہ ہو گا انہوں نے کہا کہ بہاول پور کی عوام صوبہ بہاول پور سے کم حکمرانوں کی کوئی بات سننے کو تیار نہیں ہے ن لیگ الیکشن سے قبل صوبہ بحال نہ کرکے سیاسی خود کشی کر رہی ہے احتجاجی کیمپ سے تحریک صوبہ بہاول پور کے چیئر مین جام حضور بخش نے کہا کہ تاریخ گواہ ہے جس تحریک میں خواتین سڑکوں پر آجائے اس تحریک کی کامیابی کو دینا کی کوئی طاقت نہیں روک سکتی تحریک میں خواتین کی شرکت کے بعد صوبہ بہاول پور کی بحالی نوشتہ دیوار ہے بہاول پور صوبہ محاذ کے سربراہ سید مجید ہاشمی ،تحریک بحالی صوبہ بہاول پور نواز ناجی ،اکرم انصاری ،تحریک صوبہ بہاول پور کے سیکرٹری جنرل نصراللہ ناصر ،پی ٹی آئی کی خاتون رہنماسمیرا ملک خواتین و نگ کی رہنماء عزیز بیگم،مہناز بی بی،صغراں بی بی ،راحت خالد ،سیدہ غزالہ عمبر ین ،بختو مائی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بہاول پور کی محرومیاں ختم کرنے اور اس خطہ کو دوبارہ خوشحال بنانے کے لیے بہاول پور صوبہ کا قیام وقت کی ضرورت ہے بعدازاں ڈ اکٹر سید وسیم اختر،جام حضور بخش ،نصراللہ ناصر کی قیادت میںخواتین نے پریس کلب سے یونیورسٹی چوک تک احتجاجی ریلی بھی نکالی بھی نکالی گئی