کراچی ،اورنگی ٹاون میں کمسن بچی کے اغوا ، زیادتی اور قتل میں ملوث مرکزی ملزم گرفتار

مقتولہ بچی اسے شکل سے جانتی تھی جس کی وجہ سے بچی کو ٹافیاں دلانے کے بہانے منگھوپیر کے علاقے میں لے جاکر قتل کردیا،ملزم کا ابتدائی بیان

جمعہ اپریل 19:04

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 اپریل2018ء) کراچی کے علاقے اورنگی ٹاون میں کمسن بچی کے اغوا ، زیادتی اور قتل میں ملوث مرکزی ملزم فقیر محمد کو پولیس نے سرجانی ٹاون کے علاقے سے گرفتار کرلیا ۔

(جاری ہے)

تفصیلات کے مطابق تحقیقاتی ٹیم کو اطلاع ملی تھی پانچ سالہ رابعہ کے اغوا ، زیادتی اور قتل میں ملوث ملزم سرجانی ٹاون کے ایک مکان میں روپوش ہے پولیس کی بھاری نفری نے چھاپہ مارکر ملزم فقیر محمد کو گرفتار کرلیا ذرائع نے بتایا ملزم نے ابتدائی بیان دیا مقتولہ بچی اسے شکل سے جانتی تھی جس کی وجہ سے وہ بچی کو ٹافیاں دلانے کے بہانے منگھوپیر کے علاقے میں لے جاکر قتل کردیا قتل میں اس کے دو دوست رحیم اور فضل بھی شامل تھے واردات کرنے کے بعد دوبارہ اورنگی ٹاون کے علاقے میں اپنے اپنے گھروں میں آکر بیٹھ گئے شام ہوتے ہی علاقے میں بچی کے اغوا کی خبر جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئی جس پر ہم خوف زدہ ہوگئے کریم بخش نے کہا کہ محلے سے بھاگ چلتے ہیں میں نے کہا بھاگو کہ تو سب کو ہم پر شک ہوجائیگا اگلے دن جب بچی لاش ملی اور اس کے دادا نے ہمارے خلاف نامزد مقدمہ منگھوپیر تھانے میں درج کرایا تو میں علاقے سے فرار ہوکر سرجانی ٹاون کے ایک مکان میں چھپ گیا اس کے بعد میڈیا کے ذریعے معلوم ہوا کہ اورنگی ٹاون کے مختلف علاقوں میں ہنگامے پھوٹ پڑے اور بچی کے قتل میں ملوث دونوں ملزمان کو پولیس نے گرفتار کرلیا اس کے بعد میں مزید پریشان ہوگیا پولیس نے رحیم اور فضل کی نمونے تحقیقاتی ٹیم نے جامشورہ لیاقت یونیورسٹی میں جمع کرادیئے جس کی رپورٹ پیر تک پولیس کو موصول ہوجائیگی پندرہ اپریل کو گرفتار ٹینوں ملزمان نے کمسن بچی رابعہ کو اورنگی ٹاون میں اس کی رہائش گاہ کے باہر سے اغوا کرکے قتل کردیا تھا ہنگامہ آرائی میں ایک شخص جاں بحق اور تین افراد زخمی ہوئے تھے جبکہ پتھراو سے پولیس کے تیرہ افسران و جواں زخمی ہوئے تھے