سی پیک سے پاک چین دوستی مزید مضبوط ہوئی ہے، پاکستان کو خطے میں امن و استحکام کے حوالے سے مضبوط دیکھنا چاہتے ہیں، چینی سفیر یاو جنگ کا سیمینار سے خطاب

پیر اپریل 17:12

کراچی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 اپریل2018ء) پاکستان میں چین کے سفیر یاو جنگ نے کہا ہے کہ سی پیک سے پاک چین دوستی مزید مضبوط ہوئی ہے، پاکستان کو خطے میں امن و استحکام کے حوالے سے مضبوط دیکھنا چاہتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کو ڈان میڈیا گروپ اور وزارت منصوبہ بندی کے زیر اہتمام سی پیک سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ سیمینار میں، وفاقی وزیر داخلہ و منصوبہ بندی و ترقی احسن اقبال،، وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ، وفاقی سیکریٹری پلاننگ اینڈ ڈلویلپمنٹ شعیب احمد صدیقی، سنیئر ایڈوائز انڈسٹریل اینڈ کمرشل بینک آف چائنا یاسین انور، اکنامک ایڈوائزی کونسل ممبر عارف حبیب اور نائب صدر سی ایس ای سی ٹینس ہیو سیمت دیگر اعلیٰ شخصیات بھی موجود تھیں۔

چینی سفیر نے کہا کہ سی پیک منصوبہ بے مثال ہے جس کی تاریخ میں نظیر نہیں ملتی، پاکستان کے ساتھ مضبوط ترین سیاسی تعلقات ہیں۔

(جاری ہے)

چینی سفیر یا جنگ نے کہا کہ اسپیشل اکنامک زونز پر تیزی سے کام کیا جا رہا ہے، گوادر پورٹ سمیت بنیادی ڈھانچے کے منصوبے مکمل کئے جا رہے ہیں، چین سی پیک کو دنیا کیلئے بھی بہت اہم سمجھتاہے۔ انہوں نے کہا کہ تمام ہمسایہ ممالک سے خوشگوار اور شراکت دارانہ تعلقات چاہتے ہیں، سی پیک سے دونوں ملکوں کے عوام کی تقدیریں جڑی ہوئی ہیں۔

چینی سفیر نے کہا کہ سی پیک کی منصوبہ بندی بے مثال ہے، موجودہ حالات میں سی پیک خطے کیلئے بہترین سنگ میل ثابت ہوگا، سی پیک کے تحت 43 منصوبے زیر تکمیل ہیں، ہم علاقائی امن و استحکام اور ترقی میں ہر ممکن تعان کے لئے تیار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ 40 برسوں سے چین اپنی معیشت کی ترقی اور اسے بڑھانے کے لئے ہر ممکن کوشش کر رہا ہے، سی پیک کے فائدے پاکستان،، چین کیلئے یکساں ہیں، چین پاکستان کے ساتھ اپنے تعلقات کو دیگر ممالک کے لئے ایک مثال بنانا چاہتا ہے۔

چینی سفیر نے کہا کہ مجھے فخر ہے کہ پانچ سال کے عمل درآمد کے بعد سی پیک پاکستان کی ترقی میں کردار ادا کر رہا ہے، ہم سی پیک سے صرف ایک اقتصادی ترقی نہیں بلکہ معاشرے کی ترقی چاہتے ہیں۔ نائب صدر سی ایس ای سی ٹینس ہیو نے کہا کہ پاکستان میں موٹر وے پر کام کر رہے ہیں، پاکستان میں بنائے جانے والے موٹر وے منصوبے میں پاکستان کے تمام اداروں نے بہت سہولت فراہم کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کہا کہ ہم پاکستان عوام کو یہ یقین دلاتے ہیں تمام سڑکیں عالمی معیار کی ہونگی، سکھر حیدر آباد موٹر وے کیلئے اظہار آمادگی کا خط جاری ہوگیا ہے۔ وفاقی سیکریٹری پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ شعیب احمد صدیقی نے کہا کہ سی پیک سے پاکستان کی معیشت کو بہت فائدہ ہوگا، البتہ اس میں چیلنجز بھی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک منصوبے میں آنے والی مشکلات کو حل کرنے کے لئے مسائل کے حل کے لئے کمیٹی بنا دی گئی ہے، مسائل کا حل دوستانہ ماحول میں کیا جا رہا ہے، سی پیک کا مسودہ عالمی معیار کے مطابق ہے۔

سینئر ایڈوائز انڈسٹریل اینڈ کمرشل بینک آف چائنا یاسین انور نے کہا کہ پاک چین کے درمیان تجارت کے فروغ پر فوکس کیا جا رہا ہے، سی پیک منصوبے میں صنعتوں اور زراعت کو بھی فروغ ملے گا جبکہ اسپیشل اکنامک زون کے قیام سے ترقی کے عمل کی رفتار مزید بڑھے گی۔ اکنامک ایڈوائزی کونسل ممبر عارف حبیب نے کہا کہ چین پاکستان کا سب سے بڑا تجارتی پاٹنر ہے، سی پیک منصوبہ گیم چینجر ہے، سی پیک منصوبے کے تحت پاکستان میں انفرا اسٹرکچر میں بہتری لائی جا رہی ہے۔