کابل میں ہونے والے 2 خودکش بم دھماکوں کی ذمہ داری داعش نے قبول کر لی، ان دھماکوں میں 6 صحافیوں سمیت 25 افراد ہلاک،45 زخمی ہوئے، پہلا بم دھماکہ ایک موٹر سائیکل سوار نے کیا جس کے 15 منٹ بعد دوسرا، دھماکہ ہوا جب جائے حادثہ پر کئی افراد اور صحافی جمع تھے

پیر اپریل 16:10

کابل ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 30 اپریل2018ء) افغانستان کے دارالحکومت کابل میں ہونے والے 2 خودکش بم دھماکوں کی ذمہ داری داعش نے قبول کر لی ہے جن میں 6 صحافیوں سمیت 25 افراد ہلاک اور45 زخمی ہوئے۔ برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق پیر کی صبح کابل کے علاقے شش درک میں ایک موٹر سائیکل سوار حملہ آور نے پہلا بم دھماکہ کیا، اس کے 15 منٹ بعد دوسرا دھماکہ اس وقت ہوا جب جائے حادثہ پر کئی افراد اور صحافی جمع ہوئے۔

(جاری ہے)

فرانسیسی خبررساں ادارے اے ایف پی نے بتایا کہ دوسرا دھماکہ صحافیوں کو دانستہ طور پر نشانہ بنانے کے لیے کیا گیا تھا۔۔وزارت داخلہ کے ترجمان نجیب دانش نے بی بی سی کو بتایا کہ ہلاک ہونے والوں میں 6 صحافی اور4 پولیس اہلکار بھی شامل ہیں جبکہ اب تک 45 افراد زخمی ہیں۔۔ہلاک ہونے والوں میں فرانسیسی خبررساں ادارے اے ایف پی کا چیف فوٹو گرافر شاہ مری بھی شامل ہے۔اس حملے کی ذمہ داری شدت پسند تنظیم داعش نے قبول کی ہے۔