کراچی، چیف جسٹس لیاری میں صفائی کی ناقص صورتحال اور متعلقہ اداروں کی بے حسی کا نوٹس لیں، زیر تعلیم طلبہ کی اپیل

منگل مئی 21:20

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 مئی2018ء) لیاری کے اسکولوں میں زیر تعلیم طلبہ نے چیف جسٹس آف پاکستان سے اپیل کی ہے کہ وہ علاقے میں صفائی کی ناقص صورتحال اور متعلقہ اداروں کی بے حسی کا نوٹس لیں۔ منگل کے روز لیاری کے علاقے آگرہ تاج کالونی میں واقع اسکولوں کے طلبا نے ماڑی پور روڈ پر انوکھا احتجاج کیا۔ کتابوں اور کاپیوں کے بجائے جھاڑو، برش اور وائپرز تھامے طلبہ سڑک کنارے کھڑے ہو کر دہائی دیتے رہے۔

احتجاج کے دوران اسکولوں کے طلبہ نے ہاتھوں میں بینرز اور پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے۔ جن پر’’چیف جسٹس انکل! آپ تونوٹس لیجیے اور گندے پانی سے نجات دلائیں‘‘‘۔’ ’چیف جسٹس انکل!ہم پڑھنے اسکول جاتے ہیں لیکن گٹر کے پانی سے گزرتے ہیں‘‘۔ جیسے مطالبات درج تھے ۔

(جاری ہے)

احتجاجی طلبہ سے خطاب کرتے ہوئے جماعت اسلامی ضلع جنوبی کیامیر سید عبدالرشید کا کہنا تھا کہ انتظامیہ سے بارہا رابطے کر کے تھک چکے ہیں۔

آج بچے چیف جسٹس آف پاکستان سے اپیل کررہے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ وزیراعلیٰ سندھ،، وزیربلدیات اوراراکین قومی و صوبائی اسمبلی شاید لیاری کو سندھ کاحصہ ہی نہیں سمجھتے۔ انتظامیہ کو ایک ہفتہ کی مہلت دیتے ہوئے انہوں نے اعلان کیا کہ 14 مئی تک مسئلہ حل نہ ہوا تو اسکولوں کے ہزاروں بچے ماڑی پور روڈ بلاک کر کے قومی ترانہ گائیں گے اور ماڑی پور روڈ بلاک کر دیں گے۔ سید عبدالرشید نے استدعا کی کہ چیف جسٹس ازخود نوٹس لیں کہ کروڑوں روپے کے فنڈز کہاں گئی اور کیوں بچوں کو سڑک پرآ کراحتجاج کرنا پڑا ، حکومتی غفلت کے سبب آج بچوں کو تعلیم کا حرج کرکے سڑک پر آنا پڑا۔ #