فنی خرابی کے باعث 100 سے زائد گرڈ اسٹیشنز بند

اسلام آباد اور لاہور سمیت کئی شہروں میں بجلی فراہمی منقطع‘پارلیمنٹ ہاﺅس بھی متاثر

Mian Nadeem میاں محمد ندیم پیر مئی 16:37

فنی خرابی کے باعث 100 سے زائد گرڈ اسٹیشنز بند
اسلام آباد/لاہور(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔21 مئی۔2018ء) فنی خرابی کے باعث 100 سے زائد گرڈ اسٹیشنز بند ہونے سے لاہور سمیت کئی شہروں میں بجلی کی فراہمی منقطع ہوگئی۔ابھی 16مئی کے بریک ڈاﺅن کی انکوائری مکمل بھی نہ ہوئی تھی کہ مین ٹرانسمیشن لائن میں خرابی پیدا ہوگئی۔ راوات میں 500 کے وی ٹرانسمیشن لائن میں خرابی کے باعث راولپنڈی، اسلام آباد،، جہلم سمیت دیگر شہروں میں بجلی بند ہوگئی، خرابی دو تین گھنٹے میں ابھی ٹھیک ہی ہوئی تھی کہ کالا شاہ کاکو میں این ٹی ڈی سی کے 220 کے وی گرڈ اسٹیشن میں ٹرپنگ آئی جس نے گیپکو، فیسکو اور میپکو کے سسٹم کو بھی متاثر کیا اور گدو ٹرانسمیشن لائن بھی ٹرپ کر گئی مگر پروٹیکشن سسٹم بروقت فعال ہونے سے باقی پاور پلانٹس بچ گئے۔

بجلی کے اس بڑے بریک ڈاﺅن کے باعث راولپنڈی اور اسلام آباد کے علاوہ لاہور،، گجرات، شیخوپورہ، فیصل آباد،، جہلم، کالا شاہ کاکو، منڈی بہاوالدین، سرگودھا سمیت کئی چھوٹے بڑے شہر ، قصبے اور دیہات متاثر ہوئے ہیں۔

(جاری ہے)

فنی خرابی کی وجہ سے بجلی کی طویل بندش نے زندگی مفلوج کردی اور روزہ داروں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ لاہور الیکٹرک سپلائی کمپنی (لیسکو) کے ترجمان کے مطابق راوی، شالامار اور غازی گرڈ اسٹیشنز کی 220 کے وی کی ٹرانسمیشن لائن میں فنی خرابی کے سبب لیسکو کے متعدد گرڈ اسٹیشنز کی سپلائی بند ہوگئی۔

لیسکو کا عملہ خرابی کو درست کرنے میں مصروف ہے اور بجلی کی بحالی کا کام جاری ہے۔ لیسکو کے تقریبا 60 فیصد گرڈز فعال کیے جا چکے ہیں اور 40 فیصد بند ہیں جنہیں بتدریج فعال کیا جارہا ہے۔ روات اور نیو گھگڑ گرڈ اسٹیشن ٹرپ کرجانے سے اسلام آباد اور راولپنڈی بجلی سے محروم ہو ئے‘پاور ڈویژن کے مطابق بعض علاقوں کی بجلی بحال کر دی گئی ہے تاہم اسلام آباد اور راولپنڈی کے شہریوں کو مزید 2 گھنٹے بجلی کی لوڈشیڈنگ برداشت کرنا ہوگی۔

پاور ڈویژن نے دعویٰ کیا کہ دونوں شہروں کے علاوہ پورے ملک میں بجلی کی فراہمی کا نظام مکمل طور پر بحال اور فعال ہے۔روات اور نیو گھگڑ میں گرڈ اسٹیشن ٹرپ ہونے سے پارلیمنٹ ہاﺅس ایک بار تاریکی میں ڈوب گیا اور سینیٹ کی پارلیمانی امور کمیٹی کے اجلاس کے دوران پارلیمنٹ کی بجلی چلی گئی۔اس حوالے سے بتایا گیا کہ پارلیمنٹ ہاﺅس میں لوڈشیڈنگ کے باعث ملٹی میڈیا بند ہوگیا جس کے بعد سینیٹ کمیٹی کے اجلاس کی کارروائی روک دی گئی۔

تاہم پارلیمان کے کچھ فلورز کو متبادل ذرائع سے بجلی کی فراہمی جاری ہے۔واضح رہے کہ الیکشن کمیشن حکام انتخابات سے متعلق پارلیمانی کمیٹی کو بریفنگ دے رہے تھے۔اس سے قبل 16 مئی کو بھی تربیلا، منگلا اور دیگر پاور پلانٹس میں فنی خرابی کے باعث بجلی کا بڑا بریک ڈاﺅن سامنے آیا تھا جس کے باعث پورے ملک میں بجلی کی فراہمی متاثرہوئی تھی۔