صوبائی وزیر انسانی حقوق و اقلیتی امور خلیل طاہر سندھو کی انسانی حقوق کے تحفظ بارے سیمینار میں خصوصی شرکت

انسانی حقوق کی پالیسی 2018 صوبہ بھر میں انسانی حقوق کے تحفظ کوبرقرار رکھنے کی سمت میں اہم قدم ثابت ہوگا{صوبائی وزیر

جمعہ مئی 20:16

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 مئی2018ء) صوبائی وزیر انسانی حقو ق و اقلیتی امور خلیل طاہر سندھو کی انسانی حقوق کے تحفظ بارے سیمینار میں خصوصی شرکت۔سیمینار کا اہتمام محکمہ انسانی حقوق و اقلیتی امور ،،پنجاب نے ایک نجی ہوٹل میں کیاتھا، جس میں صوبہ پنجاب میں پہلی مرتبہ تاریخی پالیسی برائے تحفظ انسانی حقوق 2018پر تبادلہ خیال کیا گیا۔اس پالیسی پر 2016میں نیشنل ایکشن پلان کے تحت کام شروع ہوا تھا تاہم حال ہی میں پنجاب اسمبلی سے منظور ہونے کے بعد باقاعدہ نافذالعمل ہو چکی ہے۔

سیکرٹری انسانی حقوق و اقلیتی امور عاصم اقبال نے تمام شرکاء کو پالیسی بارے تفصیلی بریفنگ دی اور بتایا کہ محکمہ انسانی حقوق صوبہ بھر میں بچوں، خواتین،سینئر شہریوں، خواجہ سرائوںاور اقلیتوں سمیت تمام افرادکے بنیادی حقوق کے تحفظ کے لئے تمام ضروری اقدامات کرنے کے لئے پرعزم ہے۔

(جاری ہے)

تمام شرکاء نے پنجاب حکومت کی جانب سے انسانی حقوق اور اقلیتی امور کے معاملات کے حوالے سے کیئے جانیوالے اقدامات کو سراہا اور انسانی حقوق کی پالیسی برائے 2018 میںبچوں ، خواتین، اقلیتوں، سینئر شہریوں، خواجہ سراء،، سول سوسائٹی،،خبر تک رسائی، اقتصادی اور ثقافتی حقوق کے حوالے سے محکمہ انسانی حقوق کی جانب سے پالیسی متعارف کرانے کی تعریف کرتے ہوئے اپنے بھرپور تعاون کا اظہار کیا۔

تقریب کے اختتام پر صوبائی وزیر خلیل طاہر سندھو نے اپنے خطاب میں کہا کہ یہ پالیسی پاکستان کی تاریخ میں بلاشبہ ایک اہم سنگ میل ثابت ہوگا۔محکمہ انسانی حقوق کے پلیٹ فارم سے بہترین قانون سازی اور پالیسی فریم ورک پر عملدرآمد کو یقینی بنانے کیلئے تمام متعلقہ اداروں کو اپنا کردار احسن طریقے سے سر انجام دینا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ انسانی حقوق کی پالیسی 2018 صوبہ بھر میں انسانی حقوق کے تحفظ کوبرقرار رکھنے کی سمت میں اہم قدم ثابت ہوگا اور یہ پا لیسی تمام متعلقہ اداروں کے ساتھ ملکر صوبہ پنجاب کو امن کا گہوارہ بنانے میں اپنا مرکزی کردار ادا کرے گی۔

سیمینار میں اقلیتی ایم پی ایز،سیکرٹری انسانی حقوق و اقلیتی امور عاصم اقبال، پی اینڈ ڈی،سوشل ویلفیئر ، خواتین، قانون، صحت، سی اینڈ ڈبلیو، سکول ایجوکیشن، کھیل کے محکموں کے نمائندگان نے شرکت کی ۔