سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے افسران و عملے کی ملی بھگت سے شہر میں غیر قانونی تعمیرات جاریں

غیرقانونی تعمیراتی سرگرمیوں کو فی الفور نہ روکا گیا تو وہ سندھ بلڈنگ کنڑول اتھارٹی کے دفتر پر دھرنا دیں گے،ناظم آباد 2نمبر کے مکینوںکا اعلان

منگل مئی 16:31

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 29 مئی2018ء) سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے افسران و عملے کی ملی بھگت سے شہر میں غیر قانونی تعمیرات جاری ہیں۔ تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ کے حکم کے باجودشہر میں سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کی ملی بھگت سے کئی علاقوں میں بلڈرز مافیا غیر قانونی بلڈنگز کی تعمیرات کررہی ہے۔ ناظم آباد2نمبر میں پلاٹ نمبر II-A, 5/28پر غیر قانونی تعمیر پر مقامی آبادی شدید پریشانی کا شکار ہے۔

اہلِ علاقہ نے کئی بار سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کو تحریری طورپر درخواستیں بھی دیں، لیکن سندھ بلڈنگ کنڑول اتھارٹی نے اب تک اس غیر قانونی تعمیر کے خلاف کوئی قدم نہیں اٹھایا، اس سلسلے میں مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی اپنی کارکردگی دکھانے کیلئے کسی ایک جگہ پر غیر قانونی تعمیر ی عمارت کو منہدم کرکے فوٹو سیشن کرالتی ہے لیکن شہر کے کئی علاقوں میں سندھ بلڈنگ اتھارٹی کی کی ملی بھگت سے غیر قانونی تعمیر ات جاری ہیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے محکمہ اینٹی کرپشن اور ڈی جی نیب سندھ سے ان خلافِ ضابطہ اور غیر قانونی تعمیرات کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے اور چیف جسٹس سندھ ہارئی کورٹ سے بھی مطالبہ کیا ہے کہ وہ سندھ بلڈنگ کنڑول اتھارٹی کے کرپٹ عناصر کے خلاف سوموٹو نوٹس لیتے ہوئے شہر کے رہائشی علاقوں میں غیر قانونی پورشن اور یونٹس کا سروے کرا کر ان کے خلاف کاروائی کا حکم دیں۔ناظم آباد 2نمبر کے مکینوںنے اعلان کیا ہے کہ اگر ان کے علاقے میں جاری غیرقانونی تعمیراتی سرگرمیوں کو فی الفور نہ روکا گیا تو وہ سندھ بلڈنگ کنڑول اتھارٹی کے دفتر پر دھرنا دیں گے۔