پی ٹی آئی کا نام دے کرواپس لینا سمجھ سے باہر ہے،شہبازشریف

نگراں وزیراعلیٰ کا نام اپوزیشن نےدیا تھا، ناصرمحمودکھوسہ کے نام کواپوزیشن لیڈرکیساتھ مشاورت کےبعد فائنل کیا گیا تھا،وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف کا ردعمل

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ بدھ مئی 17:28

پی ٹی آئی کا نام دے کرواپس لینا سمجھ سے باہر ہے،شہبازشریف
لاہور(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔30 مئی 2018ء) : وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے حیرانگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایک بار نام دے کرواپس لینا سمجھ سے باہر ہے،نگراں وزیراعلیٰ کا نام اپوزیشن نے دیا تھا،ناصرکھوسہ کے نام کو مشاورت کے بعد فائنل کیا گیا تھا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے لاہور ایئرپورٹ پر ہنگامی اجلاس طلب کرلیا ہے۔

شہبازشریف آج راجن پور اور بہاولپور کے دوروں پر تھے کہ تحریک انصاف نے نگراں وزیراعلیٰ پنجاب کا نام واپس لے لیا ہے۔ تحریک انصاف کے نگراں وزیراعلیٰ پنجاب ناصرکھوسہ کے نام واپس لینے پر وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف نے اپنے ردعمل میں کہا کہ پی ٹی آئی کی جانب سے ایک بار نام دے کرواپس لینا سمجھ سے بالاتر ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ ناصر کھوسہ کوبطور نگران وزیراعلیٰ پنجاب مشاورت کے بعد فائنل کیا گیا تھا۔

جبکہ ناصر کھوسہ کا نام بھی اپوزیشن کی جانب سے دیا گیا تھا۔شہبازشریف نے پی ٹی آئی کے یوٹرن پرلاہور ایئرپورٹ پر ہنگامی اجلاس طلب کرلیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نگراں وزیراعلیٰ کے معاملے پر آئینی ماہرین سے مشاورت کی جائے گی۔ مشاورت کے بعد ہی کوئی فیصلہ کیا جائے گا کہ نگراں وزیراعلیٰ کا نام واپس کرنے کی آئین میں کوئی گنجائش موجود ہے یا نہیں۔

واضح رہیتحریک انصاف نے اپنے ہی نامزد کردہ نگران وزیراعلیٰ پنجاب ناصر کھوسہ کا نام واپس لے لیا ہے۔ پی ٹی آئی نے ناصر محمود کھوسہ کے نام کو متنازع گردانتے ہوئے کہا کہ یہ ہمارا نام نہیں ہے۔ اپوزیشن لیڈرمیاں محمود الرشید نے کہاکہ نامزد نام پر پارٹی اور باہر سے مخالفت کی آوازیں آرہی تھیں۔نئے نام پارٹی مشاورت کے بعد آج ہی سامنے آجائیں گے۔

تحریک انصاف نے کامران رسول اور طارق کھوسہ کے ناموں پر مشاورت شروع کردی ہے۔انہوں نے کہاکہ تحریک انصاف کی جانب سے سابق چیف سیکرٹری ناصرمحمود کھوسہ کانام دیا گیا تھا،جلد بازی میں غلطی ہوگئی۔ اب ہم نام واپس لے رہے ہیں۔دوسری جانب وزیرقانون پنجاب رانا ثناء اللہ نے تحریک انصاف کی جانب سے نگراں وزیراعلیٰ پنجاب ناصرمحمود کھوسہ کا نام واپس لینے پر اپنے ردعمل میں کہا کہ تحریک انصاف نے نگران وزیراعلیٰ پنجاب ناصر محمود کھوسہ کی نامزدگی پر مذاق کیا ہے۔

نگراں وزیراعلیٰ پنجاب کی نامزدگی ایک آئینی و قانونی طریقہ کے تحت کی گئی ہے۔ جس کے باعث نگراں وزیراعلیٰ پنجاب کا نام واپس لینے کی اب کوئی گنجائش نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف اب جو مرضی کہتی رہے کہ ہم نے جلد بازی میں نامزدگی کردی یا جو کچھ مرضی کہے۔ اب نگراں وزیراعلیٰ پنجاب کی جس پرآئین کے تحت نامزدگی ہوئی ہے اسی طرح ان کی نامزدگی کا نوٹیفکیشن بھی جاری کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے ساتھ اب نگراں وزیراعلیٰ پنجاب کے نام پر کوئی مشاورت یا نظر ثانی نہیں کی جائے گی۔وزیرقانون پنجاب رانا ثناء اللہ نے واضح کیا کہ یہ ممکن ہی نہیں ہے کہ اب نگراں وزیراعلیٰ کے نام پردوبارہ مشاورت کی جائے، یانام واپس لے لیا جائے۔