ْکوئٹہ شہر کی آبادی 22لاکھ ، شہر میں 7لاکھ گھر ہیں ،حفاظت کرنا پولیس کا فرض ہے ،معظم جاہ انصاری

ہم اپنی جانوں کا نذرانہ دیکر لوگوں کی جان ومال کی حفاظت کرتے ہیں ،آئی جی پولیس بلوچستان

جمعرات جون 18:25

کوئٹہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 جون2018ء) آئی جی پولیس بلوچستان معظم جاہ انصاری نے کہاہے کہ اس وقت کوئٹہ شہر کی آبادی 22لاکھ ہے جبکہ شہر میں 7لاکھ گھر ہیں ،ان سب کی حفاظت کرنا پولیس کا فرض ہے ،ہم اپنی جانوں کا نذرانہ دیکر لوگوں کی جان ومال کی حفاظت کرتے ہیں ،انہوں نے یہ بات جمعرات کے روز ڈی آئی جی کوئٹہ کے آفس میں ایگل اسکواڈ کو 100موٹرسائیکل دینے کی تقریب کے موقع پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی ،اس موقع پر ڈی آئی جی کوئٹہ عبدالرزاق چیمہ ،ایس ایس پی آپریشن نصیب اللہ بھی موجود تھے ،آئی جی پولیس نے ایک سوال کے جواب میں بتایا کہ گزشتہ ارباب کرم خان روڈ پر پولیس وین پر نامعلوم افراد نے جوفائرنگ کی تھی جس سے ایک پولیس اہلکار شہید ہوگیا تھا اس گروپ کے قریب ہم پہنچ گئے اور اس کی نشاندہی بھی ہوگئی ہے کہ اس میں کونساگروپ ملوث تھا اسے جلد گرفتار کرلیا جائیگا ،انہوں نے کہاکہ آج ایگل اسکواڈ کو مزید 100موٹرسائیکلیں دی گئی ایک موٹرسائیکل دو پولیس اہلکار موجود ہوں گے ،اس طرح کوئٹہ شہر میں امن وامان کی صورتحال کو مزید بہتر بنانے ایگل اسکواڈ اپنا اہم رول ادا کریگا ،انہوں نے کہاکہ کمانڈر سدرن کمانڈ سمیت دیگر اعلی فوجی حکام نے پولیس کو جو ٹریننگ دی ہے اس کے ہم مشکور ہیں ،انہوں نے کہاکہ وی آئی پی موومنٹ ،،ریڈ زون ،اہم قبائلی شخصیات ،دکانوں ،پلازوں کے حفاظت کرنا بھی پولیس کے فرائض میں شامل ہیں ،وزیراعلی بلوچستان نے پولیس کیلئے جو خصوصی گرانٹ دینے کا جو اعلان کیا تھا اس کیلئے ایک ارب روپے کا اضافی فنڈ کی ضرورت ہے جیسے ہی حکومت اسے پورا کرے گی وہ پولیس کے محکمے کو مل جائیگا ،انہوں نے کہاکہ ہمیں روزانہ دھمکیاں ملتی ہے مگر ہم اپنی جان ہتھیلی پر رکھ ڈیوٹی دیتے ہیں ،یوم حضرت علی کے موقع پر بھی ہمیں اطلاع دی گئی کہ خودکش حملہ ہوسکتاہے مگر ہم نے جانوں کی پرواہ کئے بغیر 10ہزار سے زیادہ نفری کوئٹہ شہر میں تعینات کی گئی تھی اور کوئٹہ شہر اور خاص طورپر یوم علی کے موقع پر نکالے گئے جلوسوں کی نگرانی کی جارہی تھی ،آئی جی پولیس بلوچستان نے کہاکہ دہشتگردوں کے کوئٹہ شہر میں مختلف گروپ کام کررہے تھے ان میں سے کافی گروپوں کا صفایا کرلیا گیا جو چند ایک بچ چکے ہیں ان پر بھی قابو کرلیا جائیگا ،انہوں نے کہاکہ ایگل اسکواڈ کو کاغذات چیک کرنے کا کوئی اختیار نہیں ہوگا صرف اسلحہ ودیگر دہشتگردی کا سامان چیک کرنا اور اسے گرفتار کرنا ہوگا ،انہوں نے کہاکہ اس وقت کوئٹہ شہر میں ایگل اسکواڈ کے 2سو موٹرسائیکل گشت پر ہے اس طرح ٹوٹل 4سو پولیس اہلکار کوئٹہ شہر میں امن وامان برقرار رکھنے سمیت دیگر امور کی ڈیوٹی سرانجام دے رہے ہیں ،انہوں نے کہاکہ ہمارا ویژن اور مشن یہ ہے کہ کوئٹہ شہر سمیت بلوچستان میں امن وامان کی صورتحال کو ہر حالت میں برقرار رکھا جائے،ہمیں دھکمیاں روازنہ ملتی ہے مگر ہم دھمکیوں سے نہ پہلے گھبرائے تھے اور آئندہ گھبرائیں گے بلکہ اپنی جان کی پرواہ کئے بغیر لوگوں کی جان ومال کا تحفظ کریں گے ،انہوں نے کہاکہ اس وقت کوئٹہ شہر کی آبادی 22لاکھ اور مکانات 7لاکھ سے اسکے علاوہ دکانیں ،پلازہ ،گودام وغیر ہ الگ ہیں ان سب کی حفاظت کرنا ہمارا فرض ہے جو ہمیں خوش اسلوبی سے ادا کررہے ہیں ،حکومت محکمہ پولیس کیساتھ ساتھ مکمل تعاون کررہی ہے اور ہماری ضروریات ہے وہ ہرحالت میں پورا کررہی ہے ،انہوں نے کہاکہ کوئٹہ شہر میں ٹریفک کا مسئلہ بہت اہم ہے ،اور اسے حل کرنا پولیس کی ذمہ داری ہے ،انہوں نے کہاکہ ہمار انٹیلی جنس سے رابطہ مکمل ہے اور جہاں ضرورت وہ چھاپہ مارکر دہشتگرد وں کو گرفتا کرتے ہیں اور اب تک ہم نے کئی دہشتگردوں کو گرفتار کرکے لوگوں کی جان ومال کا تحفظ کیا ہے ۔