عمران خان کی جانب سے متنازعہ حلقوں میں دوبارہ سروے کروانے کا فیصلہ

تحریک انصاف کے کارکنوں کے احتجاج کے باعث متنازعہ حلقوں میں جاری کیے گئے ٹکٹس منسوخ کر دیے گئے

muhammad ali محمد علی منگل جون 19:04

عمران خان کی جانب سے متنازعہ حلقوں میں دوبارہ سروے کروانے کا فیصلہ
اسلام آباد (اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار-19 جون 2018ء ) عمران خان کی جانب سے متنازعہ حلقوں میں دوبارہ سروے کروانے کا فیصلہ کیا گیا ہے، تحریک انصاف کے کارکنوں کے احتجاج کے باعث متنازعہ حلقوں میں جاری کیے گئے ٹکٹس منسوخ کر دیے گئے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق عمران خان کی رہائش گاہ بنی گالہ میں کئی روز سے ٹکٹوں کی مبینہ غیر منصفانہ تقسیم کیخلاف تحریک انصاف کی جانب سے کیے جانے والا احتجاج اب بھی جاری ہے۔

اس تمام صورتحال کے باعث اب تحریک انصاف کے سربراہ مران خان کی جانب سے متنازعہ حلقوں میں دوبارہ سروے کروانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ تحریک انصاف کے کارکنوں کے احتجاج کے باعث متنازعہ حلقوں میں جاری کیے گئے ٹکٹس منسوخ کر دیے گئے ہیں۔ ان حلقوں میں جاری کیے گئے ٹکٹس پر نظر ثانی کی کی جائے گی اور دوبارہ سے سروے بھی کروائے جائیں گے۔

(جاری ہے)

عمران خان نے کارکنوں کو یقین دہانی کروائی ہے کہ ٹکٹوں کی تقسیم کے معاملے میں جہاں کوئی غلطی ہوئی، اسے درست کیا جائے گا۔

دوسری جانب بنی گالہ میں ٹکٹیں نہ ملنے پر شروع ہونے والا احتجاج شدت اختیار کر گیا۔ صورتحال کشیدہ ہونے پر رینجرز کو طلب کر لیا گیا ہے۔ رینجرز کواسلام آباد کی ضلعی انتظامیہ کے کہنے پر تعینات کیا جارہا ہے۔تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف نے ملک کے طول عرض سے اپنے انتخابی امیدواروں کا اعلان کر دیا ہے۔اس موقع پر پاکستان تحریک انصاف نے بہت سے نظریاتی کارکنان کو نظر انداز کر کے ایسے لوگوں کو ترجیح دی گئی جو نئے نئے تحریک انصاف میں شامل ہوئے تھے تاہم اپنے علاقے میں خاصا اثر و رسوخ رکھتے تھے اور پہلے سے ابھی اپنے حلقوں میں الیکشن یا تو جیت چکے تھے یا پھر جیتنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔

اس اعلان کے بعد پاکستان تحریک انصاف کو شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے کیونکہ نظریاتی کارکنان نے ٹکٹیں نہ ملنے پر واویلا کھڑا کر دیا ہے ۔جس روز ٹکٹوں کی تقسیم کی گئی تھی اسی روز سے تحریک انصاف کے کارکنان نے بطور احتجاج بنی گالہ کے سامنے ڈیرے جما لئیے تھے ۔یہ شکایت پورے ملک میں تحریک اںصاف کے کارکنان کو تھی۔تازہ ترین خبر یہ ہے کہ بنی گالا میں احتجاج کا سلسلہ شدت اختیار کر چکا ہے، عید کے دنوں میں بھی بنی گالہ کا گھیراو کرنے والے مظاہرین کے صبر کا پیمانہ لبریز ہو چکا ہے۔

اس ساری صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے پولیس کی اضافی نفری کو بنی گالہ بھجوا دیا گیا ہے ۔جبکہ صورتحال کی نزاکت کے پیش نظر رینجرز کو بھی تعینات کیا جارہا ہے۔ذرائع کے مطابق رینجرز کو اسلام آباد کی ضلعی انتظامیہ کی درخواست پر طلب کیا گیا ہے۔یاد رہے کہ عید کے تیسرے دن بھی کارکنوں کےمزید قافلےاحتجاج کےلیےبنی گالاپہنچ گئے تھے۔جس کے بعد صورتحال بگڑی اوریہ بھی خبر تھی کہ پی ٹی آئی گجرات کےکارکن بنی گالا میں عمران خان کےدفترمیں گھس گئے تھے،کارکنوں نےجہانگیرترین کوبنی گالا سےباہرنکلنےسےروک دیا۔

مزید یہ کہ کل چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان ایک بارپھر کارکنوں کے پاس پہنچے تھے اور اس موقع پر کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کا کہنا تھا کہ ٹکٹوں کے فیصلوں میں12،12 گھنٹے بیٹھ کر تفتیش کی۔میں بھی انسان ہوں مجھ سے بھی غلطیاں ہوتی ہیں۔میں نے پہلے بھی کہا کہ اگرکسی کوغلط ٹکٹ ملاتو نظرثانی درخواست دیں۔

ہم تین دن بیٹھنے لگے ہیں اور ان پٹیشن پرفیصلہ کریں گے۔جو شکایات آپ لے کرآئے ہیں ان پرنظرثانی کررہا ہوں۔عمران خان کا کہنا تھا کہ میرا آپ سے زیادہ یقین ہے کہ ہم یہ الیکشن جیتیں گے۔کبھی کبھی اللہ کسی قوم کو بدلنے کا موقع دیتا ہے،اس بار موقع ہمیں دیا ہے۔آپ کے جذبے کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔ہاروں یا جیتوں مجھے کوئی فرق نہیں پڑے گا۔الیکشن میں صرف پانچ ہفتے رہ گئے ہیں۔اس پر کارکنان نے احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ ہم یہاں تین دن تک دھرنا دیں گے۔اگر آپ چور کو ٹکٹ دیں گے تو ہم کہاں جائیں گے۔اس پر عمران خان کا کہنا تھا کہ اگر آپ یہیں ٹھہرے رہے تو ہم اپنا کام شروع نہیں کرسکیں گے۔تاہم مظاہرین نے اپنی جگہ نہ چھوڑنے کا اعلان کیا تھا۔