زرمبادلہ کے ذخائر میںکمی قابل تشویش ہے،کاٹی

جمعہ جون 07:10

کراچی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 جون2018ء) کورنگی ایسوسی ایشن آف ٹریڈ اینڈ انڈسٹری(کاٹی) کے عہدیداران نے عالمی مالیاتی کریڈٹ ریٹنگ ایجنسی موڈیز کی جانب سے پاکستان کی کریڈٹ ریٹنگ بی تھری مستحکم سے منفی ہونے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ غیر ملکی زرمبادلہ کے ذخائر میں کمی پر قابو پانے کے لئے فی الفور موثر اور جامع اقدامات کرنے کی ضرورت ہے ۔

جمعرات کو جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق انہوں نے کہا کہ برآمدات اور درآمدات کا توازن بہت بگڑا ہوا ہے جسے موثر اورمثبت حکمت عملی سے بہتر بنانے کی اشد ضرورت ہے۔ سی پیک کے باعث ملک میں سرمایہ کاری ہورہی ہے مگر کوشش کرنی چاہئے کہ پر کشش ترغیبات کے ذریعے ملکی اور غیر ملکی سرمایہ کاروں کو بہتر مواقع اور مناسب امکانات فراہم کریں تاکہ آنے والے وقت میں پاکستان میں سرمایہ کاری میں اضافہ اور بین الاقوامی سطح پر کاروباری تعلقات کا فروغ یقینی ہو۔

(جاری ہے)

کاٹی کے سینئرنائب صدر سلمان اسلم نے کہا کہ ڈالر کی قدر میں اضافے کا رجحان جاری ہے جس کے باعث صنعتکار اور درآمدکنندگان بے یقینی کا شکار ہیں،،زرمبادلہ کے ذخائر میں تیزی سے کمی آرہی ہے اور خام مال کی قیمتوں میں اضافے کے باعث پیداواری لاگت بڑھ رہی ہے جس کا براہ راست اثر ملکی برآمدات پر پڑ رہا ہے، حکومت اور اسٹیٹ بینک کو چاہئے کہ بے یقینی کی کیفیت کو ختم کرنے کے لئے موثر اقدامات کرے تاکہ مہنگائی میں مزید اضافے پر قابو پایا جاسکے۔