این اے 35 سے عمران خان کے انتخاب لڑنے پر سوالیہ نشان کھڑا ہوگیا

عدالت نے چئیرمین تحریک انصاف کو کل عدالت میں طلب کر لیا ہے

Syed Fakhir Abbas سید فاخر عباس پیر جون 23:14

این اے 35 سے عمران خان کے انتخاب لڑنے پر سوالیہ نشان کھڑا ہوگیا
بنوں (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 جون2018ء) این اے 35 سے عمران خان کے انتخاب لڑنے پر سوالیہ نشان کھڑا ہوگیا۔ عدالت نے چئیرمین تحریک انصاف کو کل عدالت میں طلب کر لیا ہے۔تفصیلات کے مطابق الیکشن 2018 کو پاکستان کی تاریخ کا اہم ترین الیکشن سمجھا جارہا ہے۔اس الیکشن کی خاص بات یہ ہے کہ ان انتخابات کے نتیجے میں پہلی مرتبہ ایسا ہوگا کہ انتقال اقتدار جمہوری انداز سے تیسری حکومت کے سپرد ہوگا۔

اس الیکشن کو اس لیے بھی اہم قرار دیا جارہا ہے کہ اس الیکشن میں بہت سی سیاسی جماعتوں کا سیاسی مستقبل بھی طے ہو گا بالخصوص مسلم لیگ ن اور پاکستان کی ابھرتی ہوئی سیاسی طاقت تحریک انصاف۔۔ دونوں جماعتوں نے ہی اس الیکشن کو بڑا سیاسی معرکہ سمجھ کر سیاسی جنگ شروع کر دی ہے۔۔مسلم لیگ ن کو ایک بڑا دھچکا یہ بھی ہے کہ مسلم لیگ ن کے قائد اور سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف تاحیات پارلیمانی سیاست سے نااہل ہو چکے ہیں تاحال وہ ابھی بھی مسلم لیگ ن کی انتخابی کمپئین چلانے میں آگے آگے ہیں ۔

(جاری ہے)

دوسری طرف پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نہ صرف پارلیمانی سیاست میں زندہ ہیں بلکہ وہ بھرپور انداز میں الیکشن لڑ کر اس مرتبہ ملک میں تحریک انصاف کی حکومت بھی قائم کرنا چاہتے ہیں اور وہ اس حوالے سے کافی پر امید بھی ہیں۔تاہم کاغذات نامزدگی کے مرحلے پر عمران خان بڑی مشکل میں پھنس چکے ہیں ۔این اے 53 اسلام آباد سے کاغذات نامزدگی مسترد ہونے کے بعد ان کے آبائی حلقے این اے 95 سے بھی عمران خان کے کاغذات نامزدگی مسترد کر دئیے گئے تھے۔

تازہ ترین خبر کے مطابق اب این اے 35 بنوں میں بھی عمران خان کے کاغذات نامزدگی پر بھی اعتراض کر دیا گیا جس کے بعد جسٹس عبدالشکور پر مشتمل ایپلیٹ ٹریبونل نے بنوں سے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 35 سے عمران خان کے کاغذات نامزدگی منظور کئے جانے کے خلاف جسٹس ڈیموکریٹک پارٹی کے امیدوار انعام اللہ کے اعتراض کی سماعت کی۔ درخواست گزار کا موقف تھا کہ عمران خان کی ایک بیٹی بھی ہے جس کا کاغذات نامزدگی میں ذکر نہیں، جسٹس عبدالشکور نے عمران خان کو نوٹس جاری کرتے ہوئے کل عدالت طلب کر لیا ہے۔