نوازشریف نے مستقل ضمانت اور بیرون ملک علاج کے لیے سپریم کورٹ میں درخواست دائرکردی

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ سابق وزیراعظم کی مکمل صحت یابی 6 ہفتوں میں ممکن نہیں اور علاج اسی ڈاکٹر سے ممکن ہے جس نے برطانیہ میں ان کا علاج کیا

Mian Nadeem میاں محمد ندیم جمعرات اپریل 15:43

نوازشریف نے مستقل ضمانت اور بیرون ملک علاج کے لیے سپریم کورٹ میں درخواست ..
اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔ 25 اپریل۔2019ء) سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف نے سپریم کورٹ میں مستقل ضمانت دینے کی استدعا کر دی ہے. سپریم کورٹ کی جانب سے نواز شریف کو طبی بنیادوں پر ضمانت دینے کے معاملے میں سابق وزیر اعظم نواز شریف نے سپریم کورٹ کے فیصلے کے خلاف نظر ثانی کی درخواست دائر کر دی ہے. عدالت عظمیٰ میں دائر کی گئی درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ نواز شریف کی مکمل صحت یابی 6 ہفتوں میں ممکن نہیں ہے.

(جاری ہے)

نواز شریف کی جانب سے بیرون ملک علاج کے لیے سپریم کورٹ میں 15 صفحات پر مشتمل نظر ثانی درخواست دائر کی گئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ عدالت عظمٰی نے 26 مارچ کو 6 ہفتوں کے لیے مشروط ضمانت دی تھی، ضمانت طبی بنیادوں پر دی گئی، 26 مارچ کے حکم نامے میں کہا گیا کہ نوازشریف 6 ہفتوں کے دوران ملک چھوڑ کر نہیں جاسکتے. درخواست میں عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ نواز شریف کے پاکستان میں علاج کرانے کی پابندی پر نظر ثانی کی جائے، نواز شریف کا علاج اسی ڈاکٹر سے ممکن ہے جس نے برطانیہ میں ان کا علاج کیا تھا سپریم کورٹ نے لکھوائے گئے حکم نامے میں کہا ہے کہ نواز شریف ضمانت میں توسیع کے لیے ہائی کورٹ سے رجوع کر سکتے ہیں تاہم تحریری حکم نامے میں ہائی کورٹ سے رجوع کرنے کاحصہ شامل نہیں ہے.

سپریم کورٹ میں دائر درخواست میں موقف اپنایا گیا ہے کہ نواز شریف کی مکمل صحتیابی 6 ہفتوں میں ناممکن ہے جبکہ پاکستان، برطانیہ، امریکا اور سوئٹزرلینڈ کے طبی ماہرین کے مطابق نواز شریف کی زندگی کو سنگین خطرات لاحق ہیں. درخواست میں کہا گیا ہے کہ نواز شریف کو دل اور گردوں کے امراض لاحق ہیں، اس کے علاوہ سابق وزیراعظم ہائی بلڈ پریشر، شوگر اور گردوں کے تیسرے درجے کی بیماری میں مبتلا ہیں لہذا صرف پاکستان کے اندر نواز شریف کو علاج کے لیے پابند کرنے کے 26 مارچ کے فیصلے پر نظر ثانی کی جائے. واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے 26 مارچ کو سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف کو 6 ہفتے کی ضمانت دی تھی.