چھاتی کے سرطان کی آگہی سے کئی قیمتیں جانیں بچائی جا سکتی ہیں،خاتون اول

خصوصی بچوں کیلئے خصوصی قوانین متعارف کروا رہے ہیں، ثمینہ علوی کا تقریب سے خطاب وزارت خارجہ کی خاتون خانہ کا سفارتکاروں کی طرح متحرک ہونا خوش آئند ہے، سیکرٹری خارجہ سہیل محمود پفوا صرف سماجی بہبود ہی نہیں قومیتوں سے آزاد، تمام ممالک، ثقافتو?ں کیساتھ تعلقات کیلئے کام کر رہی ہے۔ صدر پفوا مہوش سہیل

اتوار نومبر 14:20

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 24 نومبر2019ء) خاتون اول ثمینہ علوی نے کہاہے کہ چھاتی کے سرطان کی آگہی سے کئی قیمتیں جانیں بچائی جا سکتی ہیں، خصوصی بچوں کیلئے خصوصی قوانین متعارف کروا رہے ہیں۔ اتوار کو خاتون اول ثمینہ علوی نے سالانہ پفوا بازار 2019 کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ پفوا کا قیام 1947 میں کیا گیا،مسز اکرام اللہ شائستہ پفوا کی پہلی صدر رہی۔

انہوںنے کہاکہ پفوا کا غریب، نادار اور مستحق خاندانوں کے لئے کام کرتی ہے،پفوا بازار کا انعقاد ہر سال کیا جا تا ہے،پفوا بازار میں دیگر ممالک کے سفراء کی شمولیت انتہائی اہمیت کی حامل ہے،ایسے پروگرام سے ملکی ثقافت کو اجاگر کیا جاتا ہے۔ انہوںنے کہاکہ بیگم رعنا لیاقت علی خان پفوا کی روح رواں رہیں، پاکستان کی مہمان نوازی اور محبت کو غیر ملکی ہمیشہ یاد کرتے ہیں۔

(جاری ہے)

ثمینہ علوی نے کہاکہ غیر ملکی سفارتخانے، سفراء ، سفارتکار اور ان کے اہل خانہ پاکستان کیلئے اہم رہے۔ انہوںنے کہاکہ پاکستان میں صاف پانی کی فراہمی، تعلیم، کتابیں اور غذاء کی فراہمی کیلئے کام کر رہے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ خواتین میں چھاتی کے سرطان سے متعلق آگہی پھیلانا اہم ہے۔ انہوںنے کہاکہ چھاتی کے سرطان کی آگہی سے کئی قیمتیں جانیں بچائی جا سکتی ہیں۔

انہوںنے کہاکہ خصوصی بچوں کیلئے خصوصی قوانین متعارف کروا رہے ہیں۔صدر پفوا مہوش سہیل نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ خاتون اول ہر قدم پر معاون رہیں،پفوا معاشرے کے پسے افراد، ضرورت مندوں کی مدد کیلئے متحرک ہے۔صدر پفوا نے کہاکہ صحت، تعلیم اور سماجی بہبود کیلئے تعاون فراہم کر رہی ہے، پفوا کا نصب العین ضرورت مند اور غریب افراد کی ہر ممکن مدد کرنا ہے۔

صدر پفوا نے کہاکہ وزارت خارجہ کی ہر ممکن امداد اور تعاون کیلئے شکر گزار ہیں۔سیکرٹری خارجہ سہیل محمود نے پفوا سالانہ بازار سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ پفوا صحت، تعلیم اور سماجی بہبود کے نصب العین کیلئے کام کر رہی ہے، وزارت خارجہ کی خاتون خانہ کا سفارتکاروں کی طرح متحرک ہونا خوش آئند ہے، خاتون اول اور پفوا پیٹرن انچیف کے ہر ممکن تعاون پر دلی طور پر شکر گزار ہیں۔سیکرٹری خارجہ نے کہاکہ مختلف ممالک کی ثقافت لیے سفراء ، سفارتکاروں اور ان کے اہل خانہ کی آمد کے بھی شکر گزار ہیں۔