بھارت،تین ماہ سے تنخواہ نہیں دی اب انہیں خود پالو، ملازم بچے دفتر میں چھوڑ گیا

کام لے رہے ہیں اور تنخواہ نہیں دے رہے تو بچے بھی وہی پالیں، سیکورٹی گارڈ نے پولیس بلا لی

اتوار ستمبر 12:05

بھارت،تین ماہ سے تنخواہ نہیں دی اب انہیں خود پالو، ملازم بچے دفتر میں ..
نئی دہلی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 20 ستمبر2020ء) بھارت میں ایک سرکاری ملازم تین ماہ سے تنخواہ نہ ملنے پر اپنے بچوں کو دفتر چھوڑ آیا اور حکام سے کہا کہ انہیں آپ ہی پالیں۔

(جاری ہے)

بھارتی میڈیا کے مطابق دارالحکومت نئی دہلی کے ایک سرکاری ہاوسنگ سوسائٹی کا کلرک نریش تین ماہ سے تنخواہ نہ ملنے کی وجہ سے شدید ذہنی دباو میں تھا، وہ احتجاجا اپنے شیر خوار بچوں کو دفتر لے آیا اور حکام سے کہا کہ میں انہیں پالنے کے قابل نہیں رہا، جب تک تنخواہ نہیں دیتے انہیں سنبھالو۔

آفس انتظامیہ کے سمجھانے وعدے وعید پر بھی نریش نہیں مانا اور بچوں کو دفتر کے گیٹ پر چھوڑ گیا، سیکیورٹی گارڈ نے پولیس کو بلایا جس پر پولیس اہلکاروں نے بچوں کو اپنی تحویل میں لے کر نریش کے گھر پہنچایا اور راشن کے لیے کچھ پیسے بھی دیئے۔واضح رہے کہ کورونا وبا کے باعث بھارت میں کم تنخواہ دار اور مزدور طبقہ انتہائی پریشانی کا شکار ہیں جس کی وجہ سے خودکشی کے واقعات میں بھی اضافہ ہوگیا ہے جس پر مودی سرکار کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔