سپریم کورٹ نے سرکاری ٹی وی کی ملازمہ نادیہ ناز ہراسگی کیس کا فیصلہ محفوظ کرلیا

منگل ستمبر 13:01

سپریم کورٹ نے سرکاری ٹی وی کی ملازمہ نادیہ ناز ہراسگی کیس کا فیصلہ محفوظ ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 22 ستمبر2020ء) سپریم کورٹ نے سرکاری ٹی وی(پی ٹی وی ) کی ملازمہ نادیہ ناز ہراسگی کیس کا فیصلہ محفوظ کرلیا ہے۔ منگل کو جسٹس مشیر عالم کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے پی ٹی وی ملازمہ نادیہ ناز ہراسگی کیس پر سماعت کی۔

(جاری ہے)

دوران سماعت نادیہ ناز کی وکیل نے موقف اپنایا کہ میری موکل کو پریشرائز کرنے کیلئے چھوٹے چھوٹے ایشوز پر تین مختلف شوکاز نوٹسز جاری کئے گئے، اختیارات کا غلط استعمال کرنا بھی ہراسگی کے زمرے میں آتا ہے۔

جسٹس مشیر عالم نے ریمارکس دیے کہ اگر نوٹسز جاری ہوئے تو قانون کے مطابق اپیل کے فورمز موجود ہیں۔ سرکاری ٹی وی ملازمین کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ صدر مملکت،محتسب اور ہائیکورٹ نے درخواست گزار خاتون کے جنسی ہراسگی کے موقف کو مسترد کیا جس پر جسٹس یحیی آفریدی نے ریمارکس دیے کہ درخواست گزار خاتون نے محتسب فیصلے کیخلاف اپیل نہ کر کے جنسی ہراسگی نہ ہونے کے فیصلے کو تسلیم کیا۔ عدالت نے کیس کا فیصلہ محفوظ کرلیا جو بعد میں سنایا جائے گا۔