بلوچستان مختلف اقوام، قبیلوں اور رنگ و نسل سے تعلق رکھنے والوں کا گلدستہ ہے،

شعراء،ادیب،مؤرخین اور مصنفین نے صوبے کی تہذیبی،ثقافتی،تاریخی،اور روایتی ترجمانی احسن انداز سے کی ہے،وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کا پشتون کلچر ڈے کے موقع پر پیغام

بدھ ستمبر 17:33

بلوچستان مختلف اقوام، قبیلوں اور رنگ و نسل سے تعلق رکھنے والوں کا گلدستہ ..
کوئٹہ۔23ستمبر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 23 ستمبر2020ء) وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے پشتون کلچر ڈے کے حوالے سے پیغام میں کہا ہے کہ بلوچستان مختلف اقوام، قبیلوں اور رنگ و نسل سے تعلق رکھنے والوں کا گلدستہ ہے، صوبے کی منفرد ثقافت، روایات اور تہذیب و تمدن یہاں بسنے والے لوگوں کی پہچان ہے ،زندہ اور باشعور قومیں اپنے ثقافتی و روایاتی اقدار اور تاریخی ورثے کا تحفظ کرتی ہیں ،انہوں نے کہا کہ زبانوں کے قومی دن کو منانے کا مقصد ان تمام روایات، ثقافت،منفرد طرز زندگی کو بہتر سمجھنے اور اسے ہمیشہ زندہ رکھنے کی کوشش ہے،صوبے کی ادبی تاریخ میں پشتون شعراء،ادیب،مؤرخین اور مصنفین نے صوبے کی تہذیبی،ثقافتی،تاریخی،اور روایتی ترجمانی احسن انداز سے کی ہے،پشتون ادب کے تاریخی اعتبار سے نمایاں نام اور روشن ستاروں میں خوشحال خان خٹک،رحمان بابا،حمزہ شنواری، عبدالعلی اخوندزادہ،پیر محمد کاکڑ،عابد شاہ عابد فاروق سرور،عمرگل عسکر شامل ہیں،وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے کہا کہ تمام شعراء اور ادباء نے اپنے کلام میں ہمیشہ پشتون قوم کو ملی یگانگت،ہم آہنگی،قومی یکجہتی،بہادری،اتحاد و اتفاق اور ہر قسم کے تعصب سے بالاتر مثبت اور تعمیری سوچ کا درس دیا ہے،آج کے نوجوانوں کو ان تمام تعمیری پہلوؤں کو مد نظر رکھتے ہوئے ملک و صوبے کی تعمیر و ترقی میں فعال کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے،انہوں نے کہا کہ معاشرے اور صوبے کی بہترین عکاسی اور ترجمانی ضروری ہے،پشتون کلچر کو روایتی علاقائی رقص اتن اور پہناوے کا انداز منفرد بناتا ہے،پشتونوں کے پکوان اور ان کی مہمان نوازی، کو تاریخ میں ہمیشہ سنہری الفاظ میں یاد رکھا گیا ہے،انہوں نے مزید کہا کہ پشتون مصنفین نے اپنی کتب میں رواداری،برداشت،تحمل مزاجی،میانہ روی پر عمل کرتے ہوئے اجتماعیت کو فروغ دینے کا درس دیا ہے آج کا یہ دن ہمیں ان تمام مثبت اصولوں پر پوری طرح سے عمل پیرا ہونے کا درس دیتا ہے ،آج کا دن تخریبی سوچ کی نفی کرتے ہوئے ایک تعمیری معاشرے کی تشکیل کی جانب راغب کرتا ہے۔

متعلقہ عنوان :